نظر ثانی کی اپیلوں کے ساتھ شریف فیملی کی "توتا کہانی " بھی ختم ہو گئی ہے :عبدالعلیم خان

loading...

عدالتوں کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے والے اب اپنے رویے پر نظر ثانی کریں :خطا ب
عبدالعلیم خان کا این اے120کے مختلف علاقوں کا دورہ ، رہنماؤں سے مشاورت و ملاقاتیں
لاہور: تحریک انصاف سنٹرل پنجاب کے صدر عبد العلیم خان نے کہا ہے کہ نظرثانی اپیلوں کے ساتھ ہی شریف فیملی کی “توتا کہانی” بھی ختم ہوگئی ہے اب عدالتوں کے خلاف ہرزہ سرائی کرنے والوں کو اپنے رویے پر نظر ثانی کرنی چاہیے عبدالعلیم خان نے این اے120کے مختلف علاقوں کے دورے کے موقع پر کارکنوں سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ضمنی الیکشن کی مہم چلانے والوں کواب احتساب عدالتوں میں پیش ہونا چاہیے ایک مرتبہ پھر سپریم کورٹ کے فاضل ججز نے قوم کے روشن مستقبل کی راہ متعین کردی ہے اورکرپشن کیخلاف جنگ میں عمران خان اور پی ٹی آئی کو ایک اور فتح حاصل ہوئی ہے عبدالعلیم خان نے کہا کہ نواز شریف کی نااہلی پر سپریم کورٹ کیخلاف پراپیگنڈہ کی مہم شروع کرنے والوں نے جی ٹی روڈ پر سرکاری وسائل سے نکالی جانے والی ریلی کے بعد حلقہ این اے 120میں بھی ڈس انفارمیشن مہم شروع کر دی مقصد یہی تھاکہ اداروں پر دباؤبڑھاکر ریفرنسز سے بچا جائے عبدالعلیم خان نے کہا کہ عوام نے چوروں کی منفی سیاست کو مسترد کردیا ہے ،سپریم کورٹ نے اپنے فیصلے پر مہر تصدیق ثبت کرکے عوام کو پیغام دیدیا کہ لوٹ مار کی کمائی سے سیاسی فرعون بننے والوں کو انجام تک پہنچانے کا وقت آگیا،بہت جلد کرپشن کے کیسزمیں ان کی گرفتاریاں ہونگی۔عبدالعلیم خان نے کہا کہ حلقہ این اے 120 کے باشعور عوام بھی کھوٹے اور کھرے کا فرق جان چکے ہیں،نواز خاندان کی سیاست ختم ہوچکی،اب ملکی دولت واپس لانے اور کرپٹ ٹولے کو جیلوں میں بھجوانے کا وقت ہے،انہوں نے کہا کہ عمران خان کی لاہور آمد سے کارکنوں میں نیا جوش جذبہ نظر آرہا ہے، عبدالعلیم خان نے کہا کہ سر کاری وسائل اور نواز لیگ کی غنڈہ گردی کے باوجود پی ٹی آئی سرخرو ہوگی۔ لندن والوں کو اپنی اوقات کا اندازہ ہوجائے گا،ہوسکتا ہے کہ انہیں پاکستان آنے کی جرات ہی نہ ہوعبدالعلیم خان نے این اے120کے دورے کے موقع پر پی پی139اور پی پی140کے مقامی رہنماؤں سے مشاورت کی جس میں 17ستمبر کے پولنگ ڈے کے بارے میں حکمت عملی طے کی گئی۔

مزید پڑھیں۔  سعودی سفیر کی عمران خان سے ملاقات ٗ سعودی فرمانروا کی جانب سے مبارکباد اور تہنیتی پیغام پہنچایا

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں