سینیٹ: فواد چوہدری کی مشاہداللہ خان پر پھر سے تنقید، اپوزیشن کا احتجاج

فواد چوہدری

وفاقی وزیر اطلاعات اور پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے رہنما فواد چوہدری اور مسلم لیگ (ن) سینیٹر مشاہد اللہ خان کے درمیاں تلخیاں ختم نہ ہو سکیں، فواد چوہدری نے ایوان بالا میں آکر ایک مرتبہ پھر مشاہد اللہ خان پر تنقید کی تو اپوزیشن نے شدید احتجاج کرتے ہوئے واک آؤٹ کیا۔

سینیٹ اجلاس کے دوران فواد چوہدری کی جانب مشاہد اللہ خان پر کی جانے والی تنقید پر گرما گرمی ہوگئی جب کہ چیئرمین نے معافی نہ مانگنے پر وفاقی وزیر کو ایوان سے نکلنے کا حکم دے دیا۔

چیئرمین سینیٹ صادق سنجرانی کی زیرصدارت اجلاس جاری تھا کہ اس دوران مسلم لیگ ن کے مشاہد اللہ خان اور وفاقی وزیر فواد چوہدری کے درمیان تلخ جملوں کا تبادلہ ہوا جو بڑھتے بڑھتے جھڑپ کی صورت اختیار کرگیا۔

سینیٹر مشاہد اللہ خان نے وفاقی وزیر سے الزامات ثابت نہ کرنے پر معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تو فواد چوہدری اپنی نشست سے کھڑے ہوگئے اور کہا کہ دیکھنا ہے کہ معافی کس سے مانگنی ہے۔ مشاہد اللہ نے پی آئی اے کا بیڑہ غرق کیا انہوں نے اپنے تین بھائیوں کو پی آئی اے میں بھرتی کرایا۔

سینیٹر مشاہد اللہ نے وفاقی وزیر سے الزامات پر معافی مانگنے کا مطالبہ کیا تو دونوں جانب سے ایک بار پھر لفظی گولہ باری شروع ہوگئی۔ چیئرمین سینیٹ نے فواد چوہدری کو ایوان سے باہر نکل جانے کا حکم دے دیا۔

وفاقی وزیر نے چیئرمین سینیٹ کی ہدایت کو نظر انداز کرتے ہوئے اپنی بات جاری رکھی اور مائیک بند ہونے کے باوجود بولتے رہے تاہم بعدازاں انہوں نے مشاہد اللہ سے معذرت کی جس پر چیئرمین سینیٹ نے انہیں بیٹھنے کی ہدایت کی لیکن وفاقی وزیر مسلسل بولتے رہے اور مجبوراً چیئرمین سینیٹ نے اجلاس جمعہ کی صبح تک ملتوی کردیا۔

Spread the love
  • 2
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں