9 کروڑ فیس بک صارفین کا ڈیٹا غیر قانونی طور پر برطانوی فرم کو دیا گیا، فیس بک

فیس بک
loading...

مارک زکربرگ 11 اپریل کو کانگریس کے پینل کے سامنے پیش ہو کر معاملے کی وضاحت کریں گے۔

سماجی رابطوں کی سب سےبڑی ویب سائیٹ فیس بک نے کہا ہے کہ برطانوی فرم کیمبرج اینالٹیکا کے ساتھ 5 کروڑ نہیں بلکہ 8کروڑ 70 لاکھ صارفین کا ڈیٹا شیئر کیا گیا۔۔ دوسری جانب کمپنی کے بانی مارک زکربرگ 11 اپریل کو کانگریس کے پینل کے سامنے پیش ہو کر معاملے کی وضاحت کریں گے۔ میڈیا رپورٹس کے مطابق فیس بک انتظامیہ نے اس بات کا اعتراف کیا کہ برطانوی تجزیاتی فرم کیمبرج انالٹیکا کے ساتھ ان 8کروڑ 70لاکھ صارفین کا ڈیٹا غیر قانونی طور پر شیئر کیا گیا تھا۔

 آپ کا فیس بک ڈیٹا کیسے چوری ہوتا ہے، اور اس سے کیسے بچا جا سکتا ہے؟

یاد رہے کہ اسکینڈل سامنے آنے کے بعد صارفین کی تعداد 5کروڑ بتائی گئی تھی۔ دوسری مارک زکربرگ 11 اپریل کو کانگریس کے پینل کے سامنے پیش ہو کر معاملے کی وضاحت کریں گے۔ زکربرگ پر سوشل نیٹ ورکنگ کی رازداری کے حوالے سے الزامات ہیں جبکہ ان پر عوامی سطح پر بالخصوص قانون دانوں اور میڈیا کی طرف سے بھی شدید دباوتھا۔

فیس بک نے ڈیٹا محفوظ بنانے کے لیے کیا اقدامات کیے ہیں جاننے کے لیے درج ذیل لنک پر کلک کریں

فیس بک صارفین اب ذاتی ڈیٹا ڈیلیٹ کرسکیں گے، مارک زوکربرگ

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں