بوم بوم آفریدی کا بھرپور کامیابی سمیٹتے ہوئے انٹرنیشنل کرکٹ کو خیرباد

آفریدی

عظیم حسین

پاکستان کرکٹ ٹیم کے سابق کپتان اور دنیا بھرمیں اپنی جارحانہ بلے بازی کے لیے خود کو منوانے والے آل راؤنڈر شاہد آفریدی کے بین الاقوامی کریئر کا لارڈز کے میدان پر اختتام ہو گیا ہے۔

 آفریدی کا نام پاکستان کے بہترین آل راؤنڈرز میں آتا ہے، ان کا پورا نام محمد شاہد خان آفریدی ہے۔شاہد آفریدی نے سن 1996 میں اپنے بین الاقوامی کریئر کا آغاز کیا اور پھر دنیائے کرکٹ کے افق کا وہ ستارہ بن گئے جو اب ہمیشہ چمکتا رہےگا۔اور اسی بدولت کئی ریکارڈ مثلاً سب سے زیادہ چھکوں کا ریکارڈ اور سب سے بہترین اسٹرائیک ریٹ کا ریکارڈ اپنے نام کر چکے ہیں۔

ان کے آخری انٹرنیشنل میچ میں انھیں آئی سی سی ورلڈ الیون کی جانب سے ’گارڈ آف آنر‘ پیش کیا گیا، اور سماجی رابطوں کی ویب سائٹس پرقومی اور غیر ملکی کھلاڑیوں کے ساتھ ساتھ بڑی تعداد میں لوگوں نے ان کے لیے نیک تمناؤں کا اظہار کیا۔

اس موقع پر انٹرنیشنل کرکٹ کونسل نے بھی شاہد آفریدی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا: ’شکریہ شاہد آفریدی ان تمام لمحات کے لیے۔‘

بوم بوم آفریدی

                         شاہد آفریدی تیز بلے بازی کی وجہ سے جانے جاتے ہیں۔ اور شروع ہی سے گیند باز پر حاوی ہونے کی کوشش کرتے ہیں۔ اسی وجہ سے وہ”بوم بوم آفریدی” کے نام سے بھی پکارے جاتے ہیں۔ اپنی جارحانہ بلے بازی کی وجہ سے کئی ریکارڈ بھی اپنے نام کر چکے ہیں۔ وہ ٹیسٹکرکٹ میں سب سے زیادہ چھکے مارنے والے کھلاڑی ہونے کے ساتھ ساتھ، سب سے بہترین اسٹرائیک ریٹ کا ریکارذ بھی اپنے نام کر چکےہیں۔تیز بلے بازی کرنے کی وجہ سے اکثر جلدی آؤٹ بھی ہونے کا خدشہ رہتا ہے۔ اسی وجہ سے اکثر ٹیم سے باہر بھی ہو چکے ہیں۔ لیکن وہکسی بھی صورت میں اپنے بلے بازی کا طریقہ نہیں بدلتے اور کئی بار مسلسل ناکام ثابت ہوتے ہیں۔ اُن کا سب سے پسندیدہ شاٹ سیدھا ہوا میںکھیلنا ہے۔ آفریدی اپنے مضبوط مصافحہ اور اپنے غصّے کی وجہ سے بھی مشہور ہیں۔

loading...

: شاہد آفریدی کا انٹرنیشنل کریئر کی چند جھلکیاں

شاہد آفریدی نے اپنے ٹیسٹ کریئر کا آغاز سن 1998 میں آسٹریلیا کے خلاف کراچی میں کھیلے جانے والے ٹیسٹ میچ سے کیا تھا ۔ ٹیسٹ کرکٹمیں شاہد آفریدی نے کل 27 میچ کھیلے اور 36.51 کی اوسط سے 1716 رنز بنائے۔ ٹیسٹ میچوں میں شاہد آفرید ی نے سب سے شاندار اننگزانڈیا کے خلاف کھیلی جس میں انہوں نے 128 گیندوں پر 156 رنز بنائے تھے۔آفریدی ٹیسٹ کرکٹ میں بھی پانچ سنچریاں اور آٹھ نصف سنچریاںسکور کر چکے ہیں، جبکہ بولنگ کی بات کریں تو اس فارمیٹ میں ان کی حاصل کردہ وکٹوں کی تعداد 48 ہے۔ انھوں نے اپنا آخری ٹیسٹ میچبھی آسٹریلیا ہی کے خلاف کھیلا تھا۔

 ون ڈے میچوں میں شاہد آفریدی کا ذکرکرتے ہی سب سے پہلی بات جو ذہن میں آتی ہے وہ ہے کم گیندوں پر تیز ترین سنچری۔ بلکہ انہوں نے تواپنے کریئر کا آغاز ہی 37 گیندوں پر سنچری سکور کر کے کیا جو اس وقت بین الاقوامی کرکٹ کی تیز ترین سنچری اور ایک شاندار اننگز تھی۔ شاہد آفریدی کا شمار ان کھلاڑیوں میں ہوتاہےجو اپنے کریئر میں بڑی تیزی سے ترقی کرتے ہیں۔

 شاہدآفریدی نے بین الاقوامی ون ڈے میچ میں سری لنکن بولنگ کے خلاف صرف 37 گیندوں پر سنچری سکور کی جس میں گیارہ چھکے اورچھ چوکے شامل تھے۔ون ڈے میچوں میں شاہد آفریدی کی 6 سنچریاں اور 39 نصف سنچریاں شامل ہیں۔شاہد آفریدی کو ون ڈے انٹرنیشنلز میں 32 بار میچ کا بہترین کھلاڑی جبکہ چار مرتبہ سیریز کا بہترین کھلاڑی قرار دیا گیا۔

شاہد آفریدی اپنی جارحانہ بلے بازی کے ساتھ ساتھ بولنگ کے شعبے میں بھی کئی بار عمدہ کارکردگی دکھا کر پاکستان کو میچز جتوا چکے ہیں۔ون ڈے میچوں میں شاہدآفریدی کی کل وکٹوں کی تعداد 398 ہے جبکہ ویسٹ انڈیز کے خلاف صرف 12 رنز کے عوض سات وکٹیں ان کا بہترین ریکارڈ ہے۔

Spread the love

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  ووٹ کی رازداری کی خلاف ورزی پرعمران خان آج الیکشن کمیشن میں طلب

اپنا تبصرہ بھیجیں