فاسٹ فوڈ سے دمہ اور الرجی لاحق ہونے کے امکانات بڑھ جاتے ہیں

فاسٹ فوڈ

چین کے ماہرین نے کہا ہے کہ فاسٹ فوڈ کھانے سے براہِ راست دمہ اور الرجی نہیں ہوتی لیکن اس سے ان امراض کے لاحق ہونے کا خطرہ ضرور بڑھ جاتا ہے۔

ویسٹ چائنا ہاسپٹل کے ماہرین کی جانب سے کی گئی تحقیق سے معلوم ہوا ہے کہ فاسٹ فوڈ کا بے تحاشا استعمال دمہ، الرجی، پولن فیور اور آنکھوں کی ایک کیفیت رائنو کنجنکٹیوٹس کی وجہ بنتا ہے۔

ویسٹ چائنا ہاسپٹل کے ڈاکٹر گینگ وینگ نے کہا ہے کہ فاسٹ فوڈ کم تر درجے کی غذا ہے اور جس کھانے میں غذائیت نہیں ہوتی وہ کئی طرح کی الرجیوں اور دمے وغیرہ کا باعث بنتا ہے۔ فاسٹ فوڈ اور دمے کے درمیان تعلق پر ماہرین کئی برسوں سے کام کر رہے ہیں

اس سے قبل 2013 میں بچوں میں دمے اور الرجی پر ایک بین الاقوامی سروے کیا گیا تھا۔ اس سروے میں 51 ممالک کے ایک لاکھ 80 ہزار بچوں کو 50 مراکز میں ایک طویل عرصے تک چیک کیا گیا تھا۔

اس تحقیق سے یہ بات سامنے آئی تھی کہ حد سے زیادہ (ہفتے میں چار سے پانچ مرتبہ) فاسٹ فوڈ کھانے والے بچوں میں دمہ، الرجی اور دیگر کیفیات زیادہ پیدا ہوسکتی ہیں۔ اس کے علاوہ بچے موٹاپے کا شکار بھی ہوسکتے ہیں۔

Spread the love
  • 5
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں