فروری 2018 کے اختتام تک تمام اراضی ریکارڈ سنٹرز نئے سافٹ ویئر سے منسلک کرنے کا فیصلہ

loading...

لاہور:  پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی نے جدید ٹیکنالوجی کو استعمال کرتے ہوئے اراضی ریکارڈ کو محفوظ بنانے اورصارفین کے لیے ریکارڈ کے حصول میں آسانی پیدا کرنے اورخدمات کے معیار کو مزید بہتر بنانے کے لئے اراضی ریکارڈ سنٹرز کو سنٹرل سافٹ ویئر سے منسلک کرنے کا کافی حد تک مکمل کر لیا ہے ۔

اس سلسلے میں اب تک صوبہ بھرم میں موجود 150اراضی ریکارڈ سنٹرز میں سے 121 سنٹرز کو اپ گریڈ کر کے سنٹرل سافٹ ویئر سے منسلک کیا جا چکا ہے۔سنٹرل سافٹ ویئر سے منسلک ہونے کی بدولت اراضی مالکان کا ریکارڈ سنٹرل آفس میں محفوظ ہو جاتا ہے جس کو کسی بھی جگہ سے حاصل کیا جا سکتا ہے۔

اس سے پہلے تمام صارفین کو اراضی ریکارڈ صرف اپنے متعلقہ اراضی سنٹر سے ہی ملتا تھا تاہم سنٹرل سسٹم سے منسلک ہونے کے بعد صارفیں اب کسی    بھی جگہ، کسی بھی اراضی یا سہولت سنٹر سے ریکارڈ حاصل کر سکیں گے۔ اس  جد ید سافٹ وئیر کی اہم خوبی یہ ہے کہ اس کو 6GB انٹرنیٹ سپیڈ پر چلایا جا رہا ہے جس کی وجہ سے طویل انتظار کا کلچر کا خاتمہ ہو گا اور صارف کوفوری متعلقہ سروس ڈیلیوری کی جا سکے گی۔

اس حوالے سے ڈائریکٹر جنرل پنجاب لینڈ ریکارڈ اتھارٹی کیپٹن(ر)ظفر اقبال کا کہنا تھا کہ فروری 2018 کے اختتام تک تمام اراضی ریکارڈ سنٹرز نئے سافٹ ویئر سے منسلک کر دیئے جائیں گے جس سے اراضی ریکارڈ کی فراہمی میں ایک نئے باب میں عاضافہ ہو گا۔۔سنٹرلائیزڈ سسٹم کی وجہ سے فرد کا حصو ل کسی بھی اراضی ریکارڈ

مزید پڑھیں۔  عمران خان عوام کے حقوق کی جنگ لڑرہے ہیں ،حاجی سیف اللہ خان کاکڑ

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں