نیب پاکستان کو بدعنوانی سے پاک ملک بنانے کے لئے پرعزم ہے،جسٹس جاوید اقبال

نیب

اسلام آباد:قومی احتساب بیورو (نیب) کے چیئرمین جسٹس (ر) جاوید اقبال نے کہا ہے کہ نیب کی انسداد بدعنوانی کی حکمت عملی ’’احتساب سب کے لئے‘‘ بہترین ہے جو مستبقل میں بھی جاری رکھی جائے گی۔

یہاں نیب ہیڈکوارٹرز میں موجودہ انتظامیہ کی جانب سے ادارے کی کارکردگی کو بہتر بنانے کے حوالے سے کئے گئے فیصلوں اور اقدامات پر عملدرآمد کی صورتحال کا جائزہ لینے کے لئے منعقدہ اجلاس کی صدارت کر رہے تھے۔ انہوں نے کہا کہ نیب پاکستان کو بدعنوانی سے پاک ملک بنانے کے لئے پرعزم ہے، اس کی انسداد بدعنوانی کی حکمت عملی ’’احتساب سب کے لئے‘‘ بہترین ثابت ہوئی ہے جو بلا امتیاز جاری رہے گی۔

loading...

انہوں نے کہا کہ تفتیشی افسران میرٹ پر شکایات کی تصدیق، انکوائریز اور انویسٹی گیشن کے لئے قانون، ایس او پیز اور ضابطہ اخلاق کی سختی سے پابندی کرتے ہیں۔ چیئرمین نیب نے کہا کہ نیب نے موثر حکمت عملی اختیار کرتے ہوئے وائٹ کالر جرائم کے مقدمات کو جلد نمٹانے کے لئے زیادہ سے زیادہ مدت دس ماہ مقرر کی ہے جو انسداد بدعنوانی کے دیگر اداروں کے مقابلے میں ایک ریکارڈ ہے۔ انہوں نے کہا کہ 2017 اور 2018 کے اعداد و شمار کے موازنہ سے نیب کے عملہ کی سخت محنت عیاں ہوتی ہے جبکہ شکایات کی تعداد میں اضافہ نیب پر عوام کے اعتماد کا عکاس ہے۔

انہوں نے کہا کہ نیب اپنے افسران و پراسیکیوٹرز کی تربیت کو ترجیح دیتا ہے۔ نیب نے مانیٹرنگ اور ایولیوایشن کا اپنا نظام قائم کیا ہے۔ نیب راولپنڈی میں پائلٹ پراجیکٹ کی کامیاب تکمیل کے بعد یہ نظام نیب ہیڈ کواٹرز اور تمام علاقائی بیوروز میں متعارف کرایا گیا ہے جس کا مقصد افراد کے ساتھ ساتھ بیورو کی کارکردگی کے دورانیہ کو مانیٹر کرنا ہے۔ چیئرمین نیب نے افسران کو ہدایت کی کہ وہ شکایات کی تصدیق، انکوائریز اور انویسٹی گیشن کا عمل قانون میں متعین کردہ وقت کے مطابق مکمل کیا جائے۔

مزید پڑھیں۔  پاکستانی فلمیں اچھا بزنس کررہی ہیں جو انڈسٹری کی کامیابی کی روشن کرن ہے، جاوید شیخ
Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں