ایرانی ریال کی قیمت تاریخ کی نچلی ترین سطح پر،حکومت نے ریٹ فکس کردیا

ایرانی ریال

ایک ایرانی ریال 42000ڈالر کے برابر،اس سے ہٹ کر لین دین اسمگلنگ سمجھا جائیگا،نائب صدرکا اعلان

تہران: ایرانی کرنسی ریال کی غیر ملکی کرنسیوں کے ساتھ شرح تبادلہ کے حوالے سے قدر و قیمت اپنی نچلی ترین سطح پر پہنچ گئی، جس کے بعد ایرانی حکومت نے امریکی ڈالر کے مقابلے میں پورے ملک میں ایک ہی شرح تبادلہ نافذ کر دی ۔

ایرانی میڈیا کے مطابق اس پیش رفت کے بعد ایرانی حکومت نے ملک میں سرکاری ریگولیشن کے دائرہ کار سے باہر کرنسی کا ہر طرح کا کاروبار ممنوع قرار دے دیا ہے اور ساتھ ہی ایک ایسی سرکاری شرح تبادلہ بھی طے کر دی ہے، جس کے تحت ملک میں ریال اور ڈالر کی خرید و فروخت کا کاروبار کیا جائے گا۔

loading...

ایران کے سرکاری ٹیلی وڑن نے ملک کے سینئر نائب صدر اسحاق جہانگیری کے حوالے سے بتایا کہ ایرانی ریال کی امریکی ڈالر کے ساتھ سرکاری شرح تبادلہ 42,000 ریال فی ڈالر مقرر کی گئی ہے، اور یہ فیصلہ فوری طور پر نافذالعمل بھی ہو گیا ہے۔

ساتھ ہی ایران کے سینئر نائب صدر جہانگیری نے یہ بھی کہا کہ ملک میں جس کسی بھی سرکاری یا نجی کاروباری ادارے نے اس شرح تبادلہ سے ہٹ کر کرنسی کا کاروبار کیا، اسے اسمگلنگ سمجھا جائے گا۔

متعلقہ افراد یا اداروں کے خلاف سخت ترین کارروائی کی جائے گی۔ ریال کی قدر میں مزید کمی کے خوف سے حکومت کے طے کردہ ریٹ پر امریکی ڈالر خریدنا چاہتے تھے۔

 اس دوران کئی ایرانی شہریوں نے یہ شکایت بھی کی کہ مارکیٹ میں امریکی ڈالر کافی مقدار میں تھے ہی نہیں کہ وہ سرکاری ریٹ پر یہ غیر ملکی کرنسی خرید سکتے۔

مزید پڑھیں۔  2 جولائی کو ملک بھر کے بینک عوامی لین دین نہیں کریں گے، اسٹیٹ بینک

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں