پیچیدہ زخموں کو بھرنے والی بینڈیج دریافت

بینڈیج
loading...

سائنس دانوں نے پیچیدہ زخموں پر نظر رکھنے اور ان کے علاج کےلیے ’اسمارٹ بینڈیج‘ (ذہین پٹی) ایجاد کرلی جو نہ صرف زخم بھرنے میں مددگار ثابت ہوگی بلکہ زخم تک دوا کی فراہمی کو بھی یقینی بنائے گی۔

  سائنسی جریدے میں اسمال شائع ہونے والی تحقیق کے مطابق اسمارٹ بینڈیج زخم  کو بھرنے میں نہایت مو ثر ہے جو زخم بھرنے کے روایتی طریقوں کو پیچھے چھوڑ دے گی۔ زخموں کے علاج کےلیے ٹیکنالوجی کے استعمال سے مریضوں کو فوری فائدہ پہنچے گا بالخصوص جلے ہوئے اعضا، حادثات اور ذیابیطس کے باعث ہونے والے زخموں کے علاج میں اس ٹیکنالوجی سے خاصی مدد حاصل ہوگی۔

  ٹفٹ یو نیورسٹی کے سائنس دانوں کی قیادت میں  کام کرنے والے محققین کی ٹیم نے اسمارٹ بینڈیج تیار کرلی ہے جو زخم بھرنے کے عمل کے انڈیکیٹرز جیسے پی ایچ ، آکسیجن اور درجہ حرارت پر نظر رکھنے کی اہلیت رکھتی ہے جب کہ اس بینڈیج کی سب سے خاص بات برقی توانائی کا استعمال کرکے زخم کو دوا فراہم کرنا ہے جس سے گہرا سے گہرا زخم بھی ٹھیک ہوجاتا ہے۔

اسمارٹ بینڈیج دو حصوں پر مشتمل ہے: پہلا زخم کو ڈھانپنے والا حصہ ہے جس میں سینسرز اور ’’ڈرگ کیریئرز‘‘ موجود ہوتے ہیں جو دوا کو زخم تک پہنچاتے ہیں؛ جب کہ دوسرے حصے میں مائیکرو پروسیسر ہوتا ہے جو زخم کی نوعیت، درجہ حرارت اور پی ایچ کو دیکھتے ہوئے سینسرز کو ان کے تفویض شدہ کام کرنے کی ہدایت دیتا ہے۔

پی ایچ اسکیل پیچیدہ زخموں کے بھرنے کے عمل کی نگرانی کا مؤثر ذریعہ ہے۔ نارمل زخم کی پی ایچ ویلیو 5.5 سے 6.5 تک ہوسکتی ہے جب کہ پیچیدہ اور نہ بھرنے والے زخم کی پی ایچ 6.5 سے زیادہ ہوتی ہے۔ اسمارٹ بینڈیج زخم کے پی ایچ پر نظر رکھتی ہے اور اس کا مائیکرو پروسیسر اسی مناسبت سے دوا کا اخراج کراتا ہے۔ ہم بینڈیج کے روایتی اور پرانے طریقوں سے زخم میں پی ایچ (یعنی تیزابیت/ اساسیت) پر نظر نہیں رکھ سکتے۔

مزید پڑھیں۔  معروف اداکارہ و ماڈل حریم فاروق کی کنیڈین پرائم منسٹر سے ملاقات، دونوں ممالک کے مابین مشترکہ فلم سازی پر بات چیت

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں