وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس ‌جاری

عمران خان

اسلام آباد : وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس جاری ہے، ایگزٹ کنٹرول لسٹ، چیئرمین نجکاری کمیشن اور چیئرمین پی آئی اے کے تقرر سے متعلق معاملات زیر بحث آئیں گے۔

تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت وفاقی کابینہ کا اجلاس وزیراعظم آفس میں شروع ہوگیا، جس میں 9 نکاتی ایجنڈے پر غور کیا جارہا ہے جبکہ ملک کی سیاسی، معاشی و اقتصادی صورتحال کا جائزہ لیا جائے گا۔

وفاقی کابینہ کے اجلاس میں پہلے 100 دن کے پروگرام سے متعلق بریفنگ دی جائے گی اور نئے آئی ایم ایف پروگرام، ایف اے ٹی ایف سے مذاکرات پر اعتماد میں لیا جائے گا۔

ایگزٹ کنٹرول لسٹ میں نام ڈالنے اور نکالنے کا معاملہ ایجنڈے میں سرفہرست ہے جبکہ چیئرمین نجکاری کمیشن کے تقرر کا معاملہ بھی ایجنڈے میں شامل ہیں۔

چیئرمین پی آئی اےکےتقررکےمعاملے پر بھی بات چیت ہو گی اور چیئرمین متروکہ وقف املاک بورڈ کے تقرر اور طریقہ کار کا جائزہ لیا جائے گا۔

کابینہ منیجنگ ڈائریکٹر پاکستان بیت المال کے تقرر کی منظوری دے گی جبکہ عطیے میں ملنے والی 4 گاڑیوں پر ٹیکس کی چھوٹ کا معاملہ بھی ایجنڈے کا حصہ ہیں۔

ٹریڈنگ کارپوریشن کی یوریا درآمد پر قواعد میں نرمی کا جائزہ لیا جائے گا اور پاکستان، مراکش میں صنعتی تعاون کےمعاہدے کی منظوری دی جائے گی۔

وفاقی کابینہ اقتصادی رابطہ کمیٹی کی جانب سے کیے گئے حالیہ فیصلوں کی توثیق بھی کرے گا اور ایم ڈی پاکستان بیت المال کی تعیناتی کی منظوری بھی آج ہوگی۔

خیال رہے سابق وزیراعظم نواز شریف نے وزارت داخلہ سے ای سی ایل سے نام نکالنے کی درخواست کی ہے، تاہم وزارت داخلہ نے ابھی کوئی جواب نہیں دیا۔

یاد رہے گذشتہ روز وزیراعظم نے ” نیا پاکستان ہاؤسنگ منصوبے” کا افتتاح کیا اور کہا تھا کہ  ہاؤسنگ اسکیم ملک میں خوشحالی لے کرآئے گی، اپنا گھراسکیم ان لوگوں کے لیے جو کبھی گھر بنانے کا سوچ نہیں سکتے تھے، گھروں کے منصوبے میں عام آدمی ہمارا ٹارگٹ ہوگا۔

عمران خان کا کہنا تھا کہ منی لانڈرنگ کو پہلے روکا ہوتا توآج قرضہ نہ لینا پڑتا، ڈاکا پڑے تو گھرمشکل وقت سے گذرتا ہے، میں آپ کو مشکل وقت سے نکالوں گا، اصلاحات کےاثرات چھ ماہ بعد آناشروع ہوں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ بے روزگاری بہت بڑامسئلہ ہے اسے حل کریں گے، 50 لاکھ  گھر بنیں گے تو روزگار کے مواقع پیدا ہوں گے، ایسا موقع ملے گا کہ نوجوان خود کنسٹرکشن سائٹس بنا کردیں گے۔

وزیراعظم عمران خان نے نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی کے قیام کا اعلان کرتے ہوئے کہا تھا اتھارٹی میں کئی ادارے شامل ہوں گے اور سربراہی خو دکروں گا، نیا پاکستان ہاؤسنگ اتھارٹی ون ونڈآپریشن فراہم کرے گی، اتھارٹی بننےتک 17 ممبران کی ٹاسک فورس بنا رہے ہیں۔

وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان کا قرضہ 6 ہزار ارب سے 30 ہزار ارب تک 10سالوں میں قرضہ بڑھ گیا ۔10 سے 20 ارب ڈالر کا شارٹ فال ہے، گزشتہ حکومت 18ارب ڈالر کا خسارہ ورثے میں چھوڑ کر گئی۔

Spread the love
  • 1
    Share

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں