جنگ عظیم اول کے 100 برس مکمل،شاہی خاندان کے افراد کی مرکزی تقریب میں شرکت

جنگ عظیم

جنگ عظیم اول کے 100 برس مکمل ہونے پر وسطی لندن میں تقریب کا انعقاد کیا گیا جس میں شاہی خاندان کے افراد اور اپوزیشن لیڈر جیریمی کوربن، برطانوی وزیراعظم نے شرکت کی۔

لندن: غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق جنگ عظیم اول کے 100 برس مکمل ہونے پر وسطی لندن میں تقریب کا انعقاد کیا گیا، ملکہ برطانیہ نے وائٹ ہال کی بالکونی سے تقریب دیکھی، پہلی عالمی جنگ میں حصہ لینے والے فوجیوں کی یاد میں 2 منت کی خاموشی اختیار کی گئی۔

برطانوی وزیراعظم تھیرسامے نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جنگ عظیم میں حصہ لینے والوں نے عظیم قربانیاں پیش کیں، پہلی جنگ عظیم 11 نومبر 1918 کو 11 بجے ختم کرنے کا اعلان کیا گیا تھا۔

جنگ عظیم

loading...

دوسری جانب پیرس میں منعقدہ تقریب میں شرکت کے لیے امریکی صدر ٹرمپ فرانس پہنچ گئے ہیں۔

ڈونلڈ ٹرمپ نے فرانسیسی صدر میکرون کی جانب سے مشترکہ یورپی فوج بنانے کی تجویز کو توہین آمیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ یورپ کو پہلے نیٹو کے اخراجات میں اپنا مناسب حصہ ڈالنا چاہئے۔

تجزیہ کاروں کے مطابق کسی ایک قوم پر جنگ شروع کرنے کی ذمہ داری نہیں ڈالی جاسکتی لیکن جرمنی وہ واحد ملک تھا جو براعظم یورپ کو اس جنگ سے بچا جاسکتا تھا۔

جنگ شروع ہونے سے قبل جرمنی کا قدامت پسند اشرافیہ اس بات کا قائل ہوچکا تھا کہ دوسرے یورپی ممالک کی طرح نوآبادیاں قائم کرنے اور جرمنی کو عظیم سلطنت بنانے کے لیے یورپی جنگ ضروری ہے۔

اگرجرمنی جولائی 2014 میں آسٹریا کو یہ کھلی چھٹی نہ دیتا کہ وہ سربیا پر چڑھائی کرے تو شاید جنگ سے بچا جاسکتا تھا۔اور جو جانی و مالی نقصان سی بچا جا سکتا تھا۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں