شیرخوار بچوں کے لیے ٹھوس غذا فائدہ مند قرار

شیرخوار
loading...

لندن :اگر شیرخوار بچوں کو جلد ہی ٹھوس غذا کی طرف لایا جائے تو اس سے بہت سے فوائد حاصل ہوتے ہیں اور نومولود کی نیند بہتر ہوتی ہے۔

امریکی اکادمی برائے اطفال اور برطانوی قومی صحت سروس کے ماہرین نے کہا ہے کہ عموماً چھ ماہ کے بعد مائیں بچوں کو دودھ پلانے کے ساتھ ساتھ دیگر ٹھوس غذائیں شروع کرتی ہیں۔ تاہم اگر ان میں مزید جلدی کی جائے تو اس کے بہت سے فوائد ہوتے ہیں۔

بچے کی نیند بہت بہتر ہو جاتی ہے۔ ٹھوس غذا کھانے والے نومولود رات میں گہری نیند سوتے ہیں اور ان کے جاگنے کا دورانیہ بھی کم ہوجاتا ہے۔

جرنل آف امریکن میڈیکل ایسوسی ایشن میں شائع ہونے والی رپورٹ کے مطابق نومولود بچے راتوں کو خود بھی جاگتے اور والدین کو بھی جگاتے ہیں اور پورے خاندان کے لیے پریشانی کا باعث بنتے ہیں۔

اسی معاملے میں کنگز کالج لندن کے پروفیسر گیڈیون لیک کہتے ہیں کہ اگر پیدائش کے تین ماہ بعد بچے کو ماں کے دودھ کے ساتھ ساتھ ٹھوس غذا بھی کھلائی جانے لگے تو بچہ گہری نیند سوتا ہے اور اس کے جاگنے کے اوقات میں 50 فیصد تک کمی واقع ہوتی ہے۔

انہوں نے یہ بھی کہا کہ یہ عمل خود بچے کے لیے کسی نقصان کی وجہ نہیں بنتا۔

اس کی وجہ یہ ہے کہ مائع کے بجائے ٹھوس غذا سے بچے کا پیٹ اچھی طرح بھرا رہتا ہے اور وہ گہری نیند سوتا ہے۔

اس کا ثبوت جاننے کےلیے سائنسدانوں نے 2009 میں 1300 ایسے بچوں کو شامل کیا جو ویلز اور انگلینڈ میں پیدا ئے اور ان سب کی عمریں تین ماہ تھیں۔ سب بچے ماں کا دودھ پی رہے تھے۔

مزید پڑھیں۔  سپریم کورٹ نے موبائل فون بیلنس پر وصول کیے جانے والا اضافی ٹیکس معطل کر دیا

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں