نواز شریف کے خلاف نیب ریفرنسز نمٹانے کی مہلت میں توسیع

نوازشریف

تفصیلات کے مطابق احتساب عدالت میں نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت جج محمد ارشد ملک نے کی۔ سابق وزیراعظم میاں نوازشریف احتساب عدالت میں پیش ہوئے۔

عدالت میں سماعت کے آغاز پرمعاون وکیل نے بتایا کہ خواجہ حارث سپریم کورٹ میں مصروف ہیں جبکہ استغاثہ کی جانب سے بتایا گیا کہ نیب کے پراسیکیوٹر بھی سپریم کورٹ میں ہیں۔

استغاثہ نے کہا کہ العزیزیہ میں شواہد مکمل ہونے سے متعلق بیان وہی دیں گے۔ معاون وکیل نے کہا کہ جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیاء کا بیان خواجہ حارث کی موجودگی میں ریکارڈ کرانا چاہتے ہیں۔

بعدازاں احتساب عدالت نے سابق وزیراعظم نوازشریف کے خلاف نیب ریفرنسز کی سماعت پیرتک ملتوی ہوگئی۔

احتساب عدالت میں گزشتہ روز سماعت کے دوران نیب پراسیکیوٹرنے نواز شریف کا بیان قلم بند کرنے کی استدعا کرتے ہوئے کہا تھا کہ سابق وزیراعظم کا بیان قلم بند کرنے کے لیے تاریخ مقرر کی جائے۔

نوازشریف کے وکیل خواجہ حارث کی طرف سے ملزم کا بیان قلمبند کرنے کی استدعا کی مخالفت کی گئی تھی۔

احتساب عدالت  نے فلیگ شپ ریفرنس میں جے آئی ٹی سربراہ واجد ضیا کوآج طلب کیا ہے اور استغاثہ العزیزیہ ریفرنس میں آج حتمی شواہد مکمل ہونے سے متعلق آگاہ کرے گا۔

یاد رہے کہ دوروز قبل احتساب عدالت میں سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اسٹیل ملز ریفرنس کی سماعت میں تمام 22 گواہوں کے بیانات مکمل ہوگئے تھے۔ نواز شریف کے وکیل نے چھٹے روز تفتیشی افسر پر جرح مکمل کی تھی۔

Spread the love
  • 1
    Share

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں