عمران خان کو زمانہ طالب علمی سے مستقبل کا طیب اردوان قرار دیتا تھا، علی شاہین

loading...

رکن ترک اسمبلی علی شاہین نے پاکستان میڈیا کلب کے 68 رکنی وفد کو دیے گئے استقبالیہ سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ عمران خان کو میں اپنے زمانہ طالب علمی میں ہی مستقبل کا طیب اردوان قرار دیتا تھا۔

پاک ترک تعلقات سیاسی جماعتوں کے درمیان نہیں عوام کے درمیان ہیں۔ دسمبر میں ہم تاجر برادری کے ساتھ تعلقات کو آگے بڑھانے کی جانب پیش رفت کریں گے۔

پاک ترک تعلقات ناخن اور گوشت جیسے ہیں۔ میں تو خود پاکستان کو اپنا گھر قرار دیتا ہوں۔ موجودہ حکومت نے ہمارے ساتھ ہر معاملے میں بھرپور تعاون رکھا ہوا ہے۔

پاک ترک اسکول کے معاملے میں بھی پاکستانی حکومت کی جانب سے بہت مثبت پیش رفت ہے جس پر ہم ان کے شکر گزار ہیں۔ کشمیر کے معاملے پر ہمارا دل بھی پاکستانیوں کی طرح دھڑکتا ہے، مظلوم مسلمانوں کے ساتھ ہم بھی پاکستان کے ساتھ کھڑے ہیں۔

علی شاہین نے سی پیک کے حوالے سے اپنی تجویز پیش کرتے ہوئے کہا کہ،سی پیک پاکستان کے لیے اہم منصوبہ ہے، لیکن میرا خدشہ ہے کہ سلطنت عثمانیہ کی فرانس والی اور ایسٹ انڈیا کمپنی کی برصغیر پر قبضہ کے تاریخی تجربات کی روشنی میں سی پیک کو پاکستان کے اپنے مکمل کنٹرول میں رکھنا نہایت ضروری ہوگا۔

اس موقع پر چیئرمین پی ایم سی ضیاء اللہ خان کے ساتھ ملک بھر سے سینیر صحافی، میڈیا پرسن کے علاوہ تمام صوبوں سے ممبران اسمبلی و مختلف صوبائی وزراء شریک تھے۔

 صوبائی وزیر داخلہ بلوچستان  نے میزبانوں کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اپنے احساس پیش کیےاور انہیں بلوچستان آنے کی دعوت بھی دی۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں