آئی جی پنجاب:مولانا سمیع الحق کا قتل اک واردات ہے دہشت گردی نہیں

Amjad saleemi

پنجاب پولیس کے سربراہ امجد جاوید سلیمی کا کہناہے کہ مولانا سمیع الحق کے قتل کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں اور یہ صرف ایک قتل کی واردات ہے۔

ترجمان پنجاب پولیس کے مطابق انسپکٹر جنرل (آئی جی) پنجاب پولیس امجد جاوید سلیمی سے 45 ویں کامن سے تعلق رکھنے والے 22 اے ایس پیز نے ملاقات کی، اس دوران آئی جی پنجاب نے افسران سے خطاب کیا اور ان کے سوالات کے جواب دیئے۔

آئی جی پنجاب نے جمعیت علمائے اسلام (س) کے سربراہ مولانا سمیع الحق کے قتل پر بات کرتے ہوئے کہاکہ مولانا کے قتل کا دہشت گردی سے کوئی تعلق نہیں، یہ صرف ایک قتل کی واردات ہے، قتل کی تفتیش مکمل ہونے پر میڈیا کو آگاہ کیا جائے گا۔

loading...

انہوں نے کہا کہ ڈولفن اہلکار کے ہاتھوں شہری کی مبینہ ہلاکت کی تفتیش بھی جاری ہے اس حوالے سے رپورٹ پر کارروائی کریں گے۔

آئی جی پنجاب کا کہنا تھاکہ پنجاب پولیس کو سیاست سے پاک کرنے کا عمل تیزی سے جاری ہے، پہلی مرتبہ ٹرانسفر پوسٹنگ بغیر سیاسی دباؤکے آئی جی کےمشورے سے کی جارہی ہے۔

امجد جاوید سلیمی نے کہا کہ ضلعی سطح پر مقدمات سے پہلے معاملات حل کرنے کے لیے کمیٹیاں بنائی جائیں گی جن میں ریٹائرڈ جج، پروفیسر، علماء، وکلاء، سینئر صحافی اور عوامی نمائندے شامل ہوں گے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں