بھارت مودی سرکار نے لائف لائن نامی ٹرین میں اسپتال قائم کر دیا

اسپتال
loading...

نئی دہلی:بھارت میں لائف لائن نامی ایک ٹرین میں قائم اسپتال نے پسماندہ اور غریب لوگوں کی زندگیوں میں انقلاب برپا کردیا ہے۔

بھارتی ٹی وی کے مطابق اس حوالے سے بھاوری دیوی نامی ایک ان پڑھ مزدور پیشہ خاتون نے بتایا کہ جب گزشتہ ماہ اس کی سماعت کی حس ختم ہوئی تو وہ سمجھیں کہ موت کے منہ میں جارہی ہیں جس پر وہ مغربی بھارت کی ریاست راجستھان میں واقع اپنے دوردراز گاؤں کے سرکاری اسپتال میں علاج کے لیے گئیں مگر اس اسپتال میں اسپیشلسٹ موجود نہ تھا۔

قریب ترین پرائیوئٹ اسپتال پڑوس کی ریاست، گجرات میں تھاجس کے لیے بھاوری دیوی کو بتایا گیاکہ سرجری پر پچاس ہزار بھارتی روپے خرچ ہوں گے۔بھاوری دیوی کے مطابق اس کے پاس تو علاج کے لیے پانچ ہزار روپے بھی نہ تھے اور وہ مایوسی میں واپس اپنے گھر واقع جیلور آگئی۔ چند روز بعد یہ خبر آئی کہ اسپیشلسٹ ڈاکٹرز یہاں آرہے ہیں اور اسے بھی مفت علاج ملے گاجس کے بعد اپریل کے اوائل میں ،سات کوچز پر مشتمل لائف لائن نامی ٹرین وہاں پہنچی جسے ایک اسپتال میں تبدیل کیا گیا تھا ۔

یہ ٹرین کم اسپتال گزشتہ ستائیس برس سے بھارت بھر میں ایسے علاقوں میں جہاں دیوی جیسے لوگ رہتے ہیں اور صحت عامہ کی سہولت جہاں میسر نہ وہاں علاج فراہم کررہی ہے۔مودی حکومت نے اس سال فروری میں ایک اسکیم کا آغاز کیا ہے جس کا مقصد ہیلتھ انشورنس اسکیم کا دائرہ کار پچاس کروڑ افراد تک وسیع کرنا ہے تاہم ان کے ناقدین کا کہنا تھاکہ یہ منصوبہ اس وقت تک کامیاب نہیں ہوسکے گاجب تک صحت عامہ کا نظام ڈرامائی طور پر بہتر نہ ہوجائے۔

مزید پڑھیں۔  دہشت گردوں کے ہاتھوں تکلیف پہنچنے والوں کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں، وزیر اعظم
Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں