ضمنی انتخابات کیلئے پولنگ کا وقت مکمل

ضمنی انتخابات
loading...

اسلام آباد: قومی اور صوبائی اسمبلیوں کی 35 نشستوں پر ضمنی انتخابات کے لیے چاروں صوبوں میں پولنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد ووٹوں کی گنتی کا عمل جاری ہے۔

قومی اسمبلی کی 11 اور صوبائی اسمبلی کی 24 نشستوں پر ضمنی انتخابات کے لیے شہریوں نے اپنا حق رائے دہی استعمال کیا تاہم ووٹنگ کا ٹرن آؤٹ بہت کم دکھائی دیا۔

تمام حلقوں پر پولنگ کا آغاز صبح 8 بجے شروع ہوا جو بلاتعطل شام 5 بجے تک جاری رہا۔

الیکشن کمیشن کے مطابق ووٹنگ کا وقت ختم ہونے کے بعد صرف پولنگ اسٹیشن کے اندر موجود لوگ ہی اپنا ووٹ کاسٹ کر سکیں گے۔

جن حلقوں پر پولنگ ہوئی اس میں اسلام آباد کی نشست این اے 53 سمیت پنجاب میں قومی اسمبلی کی 9، سندھ اور خیبرپختونخوا میں ایک ایک حلقہ شامل ہے۔

پنجاب اسمبلی کی 11، سندھ اور بلوچستان کی دو دو جبکہ خیبرپختونخوا اسمبلی کے 9 حلقوں میں ضمنی انتخابات ہو رہے ہیں۔

این اے 243 کراچی کے ایک پولنگ اسٹیشن پر شہری حق رائے دہی استعمال کر رہا ہے۔ فوٹو: جیو نیوز اسکرین گریب
الیکشن کمیشن کے مطابق مجموعی طور پر 35 حلقوں میں ووٹنگ کے لیے 7 ہزار 489 پولنگ اسٹیشنز بنائے گئے اور ایک ہزار 727 پولنگ اسٹیشنز کو حساس قرار دیا گیا۔

پنجاب کے حلقہ پی پی 87 میانوالی اور پی پی 296 راجن پور پر امیدوار بلا مقابلہ کامیاب ہوگئے۔

ترجمان الیکشن کمیشن ندیم قاسم کے مطابق ضمنی انتخابات میں پہلی بار سمندر پار پاکستانیوں نے آئی ووٹنگ کے ذریعے حق رائے دہی استعمال کیا اور 5 ہزار سے زائد افراد نے اپنا ووٹ کاسٹ کیا۔

انہوں نے کہا کہ کیونکہ یہ پائلٹ پراجیکٹ ہے اس لیے اگر اس میں کوئی تکنیکی مسئلہ نہ آیا تو الیکشن کمیشن کی منظوری کے بعد بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے ووٹوں کو گنتی میں شامل کیا جا سکتا ہے ورنہ ان کو گنتی میں شامل نہیں کیا جائے گا۔

لاہور کے دو حلقوں پر ملک بھر کے عوام کی نظریں ہیں جن میں این اے 131 پر مسلم لیگ (ن) کے خواجہ سعد رفیق اور تحریک انصاف کے ہمایوں اختر کے درمیان سخت مقابلے کی توقع ہے۔

این اے 124 میں سابق وزیراعظم شاہد خاقان عباسی کا مقابلہ تحریک انصاف کے غلام محی الدین سے ہے جب کہ گجرات سے اسپیکر پنجاب اسمبلی پرویز الہیٰ کے بیٹے مونس الٰہی میدان میں ہیں۔

سیاسی رہنماؤں نے کہاں ووٹ کاسٹ کیا؟

کراچی کے حلقے این اے 243 میں چیئرمین پی ایس پی مصطفیٰ کمال نےگلشن اقبال پولنگ اسٹیشن نمبر74 میں ووٹ کاسٹ کیا۔
کراچی سے ایم کیوایم کے امیدوار عامر چشتی نے پولنگ اسٹیشن نمبر 111 میں ووٹ کاسٹ کردیا۔
گجرات کے حلقہ این اے 69 سے مسلم لیگ (ق) کے امیدوار مونس الٰہی نے گورنمنٹ اسکول ستارہ گڑھ میں ووٹ کاسٹ کیا۔
پارٹی کےصدر و سابق وزیراعظم چوہدری شجاعت حسین نے میونسپل ماڈل اسکول مسلم آباد میں ووٹ کاسٹ کیا۔
وزیراعظم عمران خان نے اپنا ووٹ این اے 53 اسلام آباد کے پولنگ اسٹیشن موہڑہ نور اسکول بنی گالہ میں کاسٹ کیا۔ اس حلقے سے تحریک انصاف کے علی نواز اعوان امیداور ہیں۔ وزیراعظم کی آمد کے موقع پر سیکیورٹی کے سخت انتظامات کیے گئے اور پولنگ اسٹیشن کو ووٹرز سے خالی کرالیا گیا۔
لاہور کے اہم ترین حلقے این اے 131 سے مسلم لیگ (ن) کے امیدوار خواجہ سعد رفیق نے بھی ووٹ کاسٹ کردیا۔
اسپیکرقومی اسمبلی اسدقیصر نے پولنگ اسٹیشن ہائی اسکول مرغز صوابی میں ووٹ ڈالا۔
وزیردفاع پرویز خٹک نے پی کے 64 کے لیے مانکی شریف میں ووٹ کاسٹ کیا۔
سابق وزیراعظم نواز شریف نے قومی اسمبلی کے حلقہ این اے 124 میں گورنمنٹ کالج آف ٹیکنالوجی میں اپنا ووٹ کاسٹ کرنے پہنچے لیکن اپنا شناختی کارڈ نہ ہونے کے باعث وہ بغیر ووٹ کاسٹ کیے ہی روانہ ہو گئے۔

واضح رہے کہ ضمنی انتخابات میں حصہ لینے کے لیے کُل 661 امیدواروں نے کاغذات نامزدگی جمع کروائے، جن میں 16 امیدواروں کے کاغذات مسترد ہوئے اور 645 کے منظور ہوئے جو انتخابات میں حصہ لے رہے ہیں۔

Spread the love
  • 1
    Share

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں