سنگین غداری کیس: پرویز مشرف چاہتے ہیں کہ وہ خود پیش ہو کر اپنا دفاع کریں، وکیل

پرویز مشرف، غداری کیس
loading...

اسلام آباد: سابق صدر پرویز مشرف کے خلاف سنگین غداری کیس کی سماعت کے دوران وکیل نے عدالت کو بتایا کہ ان کے مؤکل خود پیش ہو کر اپنے دفاع میں شواہد پیش کرنا چاہتے ہیں۔

جسٹس یاور علی کی سربراہی میں خصوصی عدالت غداری کیس کی سماعت کر رہی ہے۔

اس موقع پر پرویز مشرف کے وکیل سلمان صفدر نے دلائل دیتے ہوئے کہا کہ پرویز مشرف ویڈیو لنک پر بیان ریکارڈ نہیں کرانا چاہتے بلکہ خود پیش ہو کر اپنا دفاع کرنا چاہتے ہیں۔

استغاثہ کے وکیل نے دلائل دیتے ہوئے کہا پرویز مشرف نے عدالت کا 342 کا بیان ریکارڈ کرانے کا موقع ضائع کردیا ہے۔

جسٹس یاور علی استفسار کیا پرویز مشرف نے دبئی کے امریکن اسپتال کا میڈیکل سرٹیفیکیٹ پیش کیا جس پر اگست کی تاریخ درج ہے اور یہ رپورٹ پرانی ہے۔

جسٹس یاور نے کہا ڈاکٹرز کو پرویز مشرف کی صحت کا دوبارہ جائزہ لینا تھا جس پر وکیل سلمان صفدر نے جواب دیا ابھی بھی میرے موکل کی صحت ویسی ہی ہے اور دل کے عارضہ کے ٹیسٹ تاحال کیے جا رہے ہیں، عدالت وقت دے تو مزید ہدایات لے سکتا ہوں۔

وکیل سلمان صفدر نے اصرار کیا کہ پرویز مشرف علیل ہیں جس پر جسٹس یاور علی نے استفسار کیا ‘کیا انہیں کینسر کا عارضہ لاحق ہے، وکیل نے جواب دیا ‘میرے موکل کو دل کا عارضہ ہے، پرویز مشرف کہتے ہیں وہ بزدل نہیں اور انہیں کسی کا خوف نہیں ہے۔

Spread the love
  • 1
    Share

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں