پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان قرضے کی شرائط پر مذاکرات جاری

پاکستانی حکام
loading...

اسلام آباد: پاکستان اور انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈ ( آئی ایم ایف) کے درمیان قرضے کے لیے شرائط پر مذاکرات کا عمل جاری ہے اور اس سلسلے میں پاکستان میں موجود آئی ایم ایف کا وفد ملاقاتیں کر رہا ہے۔

ذرائع کے مطابق آئی ایم ایف کا وفد ہیرالڈ فنگر کی سربراہی میں نیپرا ہیڈ کوارٹر اسلام آباد پہنچا جہاں ان کی چیئرمین نیشنل الیکٹرک پاور ریگولیٹری اتھارٹی (نیپرا) سے ملاقات جاری ہے جب کہ اس موقع پر نیپرا کے مختلف شعبوں کے سربراہان بھی موجود ہیں۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ آئی ایم وفد کو پاور سیکٹر کی کارکردگی پر بریفنگ دی جارہی ہے، وفد کو بجلی جنریشن ٹرانسمیشن اور ڈسٹری بیوشن شعبوں کی کارکردگی سے آگاہ کیا جارہا ہے۔

یاد رہے کہ آئی ایم ایف کا وفد 6 نومبر کو اسلام آباد پہنچا اور 7 سے 9 نومبر کے درمیان پاکستان اور آئی ایم ایف وفد کے درمیان تکنیکی سطح کے مذاکرات ہوئے جس کے دوران معیشت کے مختلف شعبوں کی کارکردگی کا ڈیٹا پیش کیا گیا۔

پاکستان اور آئی ایم ایف کے درمیان پالیسی سطح کے مذاکرات 20 نومبر تک جاری رہیں گے، بیرونی ادائیگیوں کے توازن میں بہتری کے لیے آئی ایم ایف سے 6 ارب ڈالر تک کی درخواست کی جاسکتی ہے۔

وزیر خزانہ اسد عمر کہہ چکے ہیں کہ پاکستان 19واں اور آخری آئی ایم ایف پروگرام لینے جارہا ہے، کچھ دنوں میں صورتحال واضح ہوجائے گی، آئی ایم ایف کے پاس جانے کے فیصلے میں تاخیر کا تاثر غلط ہے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں