مسلم لیگ ن کے دور حکومت میں لگائے گئے بجلی کے تمام منصوبوں کے آڈٹ کا فیصلہ

فواد چوہدری
loading...

وفاقی وزیر اطلاعات فواد چوہدری کا کہنا ہے کہ حکومت نے مسلم لیگ (ن) کے دور حکومت میں لگائے گئے بجلی کے تمام منصوبوں کے آڈٹ کا فیصلہ کیا ہے جب کہ 2 منصوبے کے آڈٹ کا آغاز بھی ہوچکا ہے۔

پریس کانفرنس کے دوران فواد چوہدری نے کہا کہ گزشتہ دور حکومت میں لگایا گیا قائداعظم سولر پاور پلانٹ دنیا کا مہنگا ترین پلانٹ ہے جب کہ بھکی ، حویلی بہادر شاہ، ساہیوال کول، پورٹ قاسم پلانٹس سے دنیا کی مہنگی ترین بجلی پیدا کی جارہی ہے۔

فواد چوہدری نے کہا کہ ان پلانٹس کی وجہ سے ایک روپیہ 32 پیسے بجلی کی قیت میں اضافہ ہوا جب کہ پنجاب میں لگائے گئے ایل این جی پلانٹس میں نیب تحقیقات کا آغاز کرچکا ہے۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ بجلی کی قیمتوں میں اضافے پر جو بات ہورہی ہے اس پر ابھی تک حتمی فیصلہ نہیں کیا، کوشش کی کہ گیس کی قیمت بڑھانے سے غریبوں پر اثر نہ پڑے، ہماری کوشش ہے کہ چیزوں کو بہتر اور ٹھیک کریں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ (ن) لیگ نے جس طرح اداروں سے کھلواڑ کیا اس کو بھی سامنے لانا ہے، جب ہم کہتے ہیں کہ احتساب ہونا چاہیے تو کچھ دوست کہتے ہیں اپوزیشن سے بنا کر رکھنی چاہیے، جب سب کچھ اس طرح چلنا ہے تو پھر تحریک انصاف کو حکومت میں آنے کی کیا ضرورت تھی۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ جہاں احتساب کا کہا جاتا ہے وہاں پر جمہوریت خطرے میں پڑ جاتی ہے، لوگوں کو پتا ہی نہیں اور ان کے اکاونٹس میں اربوں روپے نکل رہے ہیں۔

فواد چوہدری نے کہا کہ (ن) لیگ کے آخر دو سال میں بجلی کی قیمت بڑھ کر 15 روپے 53 پیسے فی یونٹ ہوئی، یہ بجلی حکومت 11 روپے 71 پیسے فی یونٹ میں فروخت کررہی تھی۔

فواد چوہدری نے کہا کہ حکومت سردیوں میں ایک ارب دو کروڑ یومیہ نقصان کررہی ہے، گرمیوں میں بجلی کا ایک ارب 80 کروڑ روپے نقصان حکومت برداشت کررہی ہے اور اس نقصان کی وجہ سے 34 ارب روپے ہرسال گردشی قرضے میں اضافہ ہوا۔

وزیر اطلاعات کا کہنا تھا کہ بجلی کی قیمت نیپرا طے کرتا ہے اور یہ ادارہ ہم نے نہیں گزشتہ حکومتوں نے بنایا ہے، نیپرا نے کہا کہ بجلی کی قیمت میں اضافہ کریں ورنہ روز نقصان ہوگا اور آج 14 ہزار میگاواٹ بجلی کی طلب ہے۔

Spread the love
  • 2
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں