نوعمر لڑکیوں میں ایڈز تیزی سے پھیل رہا ہے، رپورٹ

ایڈز

یونیسف نے خبردار کیا ہے کہ عدم معلومات اور جنسی تشدد کے باعث نوجوانوں بالخصوص نوعمر لڑکیوں میں ایڈز تیزی سے پھیل رہا ہے

 ہر تیسرے منٹ میں ایک نوعمر لڑکی وائرس سے متاثر ہو رہی ہے۔ بچوں کی فلاح و بہبود کے لیے کام  کرنے والے اقوام متحدہ کے ذیلی ادارے یونیسف نے گذشتہ ہفتے ایچ آئی وی سے متعلق ایک رپورٹ شائع کی ہے۔

 جس میں خبردار کیا گیا ہے کہ ہر تین منٹ میں  پندرہ سے انیس سال کی ایک لڑکی ایڈز کا شکار ہو رہی ہے۔ جس کی بنیادی وجہ بلوغت میں جنسی تعلقات، جبراﹰ جنسی عمل، غربت اور حفاظتی تدابیر کا علم نہ ہونا ہے۔

loading...

یونیسف کی سربراہ ہینرئیٹا فور کا کہنا ہے کہ معاشرے کے کمزور اور پسماندہ افراد زیادہ تر ایچ آئی وی وائرس سے متاثر ہوتے ہیں، جس کا مرکزی ہدف خاص طور پر نوجوان لڑکیاں بنتی ہیں۔

 دو ہزار دس کے بعد ایچ آئی وی وائرس میں مبتلا پندرہ سے انیس سال کی لڑکیوں کے سوا دیگر عمر کے افراد کی اموات میں کمی ہوئی ہے۔

واضح رہے کہ گزشتہ برس دو ہزار سترہ میں تقریباﹰ بارہ لاکھ نوعمر افراد ایچ آئی وی وائرس کا شکار ہوئے تھے۔

 جبکہ ایڈز کے مرض میں مبتلا ہر پانچ متاثرہ افراد میں سے تین لڑکیاں تھیں۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں