سگریٹ نوشی سے مردوں کی ذہنی صلاحیت کس طرح متاثر ہوتی ہے

سگریٹ نوشی
loading...

سگریٹ نوشی جتنی جلدی ممکن ہو چھوڑ دی جائے

تازہ ترین ریسرچ کے مطابق سگریٹ پینے والے مردوں کی ذہنی صلاحیتوں پر سگریٹ کا بہت اثر پڑتا ہے ۔ ان کی یادداشت سوچنے سمجھنے سیکھنے اور معلومات حاصل کرنے کی استداد بڑی تیزی سے روبہ زوال ہونے لگتی ہے۔

سوکر بل سائیڈ ہاسپٹل نیویارک میں یورالوجی کے چیف ڈاکٹر مارک گولڈن نے کہا ہے کہ حالیہ تحقیق کے نتائج نے سگریٹ کی تباہکاریوں کی طویل فہرست میں جو نیا اضافہ کیا ہے وہ اس بات کے لیے کافی ہے کہ یہ بری عادت جتنی جلدی ممکن ہو چھوڑ دی جائے۔

سگریٹ نوشی

نئے جائزے کی قیادت یونیورسٹی کالج لندن کےسیویرین سابیانکی نےکی۔ انہوں نے اپنے تفتیش کاروں ساتھیوں کی مدد سے یہ دیکھا کہ سگریٹ پینے والے مردوں کی دماغی صلاحیتیں تیزی سے تباہ ہورہی تھیں۔

جن لوگوں نےابتدائی جائزے کے بعد بھی سگریٹ نوشی کا سلسلہ جاری رکھا تھا ان کی ذہنی استعداد کار اور زیادہ متاثر ہوگئی تھی۔ جائزے میں یہ بھی دیکھا گیا کہ جن مردوں نے 10 سال پہلے سگریٹ نوشی ترک کر دی تھی ان کی ذہنی کارکردگی پر بھی اس کا کوئی قابل ذکر مثبت اثر نہیں پڑا تھا، اور وہ کسی پچیدہ منصوبے کو مکمل کرنے یا خاص مقصد حاصل کرنے میں دشواری محسوس کر رہے تھے۔

سگریٹ نوشی

ڈاکٹر مارک گولڈن کے مطابق سگریٹ نوشی کس طرح ذہنی صلاحیتوں کو متاثر کرتی ہے اس کا مکانیزم ابھی تک واضح نہیں ہوسکا۔تاہم اس جائزے میں اس کا تعلق قلبی شریانیں بیماری ہای بلڈ پریشر ہائی کولیسٹرول یا پھیپڑے کی ناقص کارکردگی سے جوڑا گیا ہے۔

مزید پڑھیں۔  عاطف اسلم بھی ڈیمز فنڈ کے لیے میدان میں آگئے

دلچسپ بات یہ ہے کہ خواتین کی ذہنی صلاحیتوں پربھی سگریٹ نوشی کے منفی اثرات دیکھنے میں آئے ہیں دونوں صنفوں میں اس فرق کی بھی کوئی واضح وجہ سمجھ میں نہیں آئی تاہم باور کیا جاتا ہے کہ چونکہ مرد حضرات خواتین کے مقابلے میں سگریٹ زیادہ پیتے ہیں اسی لیے خواتین اس سے محفوظ رہتی ہیں ۔سگریٹ نوشی

بقول ڈاکٹر مارک گولڈن کے ایک وجہ یہ بھی ہوسکتی ہے کہ جائزے میں شریک خواتین کی تعداد مردوں کے مقابلے میں آدھی سے بھی کم تقریبا 30 فیصد تھی۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں