کیا ویرات کوہلی پاکستانی باؤلرز سے ڈر گئے؟

loading...

موجودہ دور کے بہترین اور کامیاب ترین سمجھے جانے والے بھارتی کرکٹ ٹیم کے کپتان ویرات کوہلی ایشیاء کپ 2018ء میں بھارتی ٹیم کا حصّہ نہیں۔ بھارتی کرکٹ بورڈ کے مطابق ویرات کوہلی انگلینڈ کے خلاف ہوم سیریز کھیلنے کے بعد ریسٹ کریں گے۔

پاکستان اور بھارت کے درمیان ہونے والا کرکٹ میچ دنیا بھر کے شائقین کے لیے سب سے بڑا ٹاکرا سمجھا جاتا ہے۔ جس میں ناصرف پاکستان اور بھارت کی عوام انتہائی دلچسپی رکھتے ہیں بلکہ پوری دنیا میں رہنے والے کرکٹ کے شیدائی اس پاک بھارت ٹاکرے کے انتظار میں رہتے ہیں۔

ذرائع کے مطابق ایشیاء کپ 2018ء میں ویرات کوہلی کی عدم شرکت سے متعلق بھارتی کرکٹ بورڈ نے ایشین کرکٹ کونسل کو  صرف 15 دن پہلے آگاہ کیا۔ جس کے بعد ایشین کرکٹ کونسل نے اعتراز اٹھاتے ہوئے بھارتی کرکٹ بورڈ کو طے شدہ معاہدہ یاد کروایا۔ جس میں درج ہے کہ بھارتی کرکٹ بورڈ بھارتی کرکٹ ٹیم میں بہترین کھلاڑیوں کی دستیابی یقینی بنانے کا پابند ہے۔

ذرائع کے مطابق بھارتی کرکٹ بورڈ نے جواب میں کوئی معقول وجہ بتانے کی بجائے یہ کہہ دیا کہ ایشیاء کپ 2018ء کے لیے بھارتی ٹیم کی سیلیکشن بھارتی کرکٹ بورڈ کا استحقاق ہے۔

یاد رہے کہ ویرات کوہلی پاکستان کے خلاف کھیلے گئے 10 میچز میں صرف 373 رنز بنانے میں کامیاب رہے ہیں۔ جبکہ بھارتی سٹار بیٹسمین کی ایک روزہ میچز میں اوسط 53 ہے۔ لیکن پاکستان کے خلاف ون ڈاؤن کھیلنے والے بھارتی بیٹسمین کی اوسط صرف 41 ہے۔

یہ بھی یاد رہے کہ پاکستانی ٹیم کے مایہ ناز باؤلر جنید خان کے خلاف ویرات کوہلی 22 گیندوں پر صرف 2 رنز بنانے میں کامیاب رہے تھے جبکہ ویرات کوہلی 4 میچز میں سے 3 میچز میں جنید خان  کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔

اس کے علاوہ کوہلی اور محمد عامر کے درمیان چیمپیئنز ٹرافی میں ہونے والا ٹاکرا تو سب کو یاد ہی ہے۔ جس میں محمد عامر کی پہلی ہی گیند پر کوہلی کا پہلے کیچ ڈراپ ہوا۔ لیکن اگلی ہی گیند پر کوہلی پھر سے محمد عامر کے ہاتھوں آؤٹ ہوئے۔

بھارتی سپر سٹار بیٹسمین ویرات کوہلی کی پاکستان کے خلاف کارکردگی اور بھارتی کرکٹ بورڈ کی طرف سے ایشین کرکٹ کونسل کو ایشیاء کپ سے صرف 15 دن پہلے کوہلی کی شرکت سے متعلق آگاہ کرنا ثابت کرتا ہے کہ ویرات کوہلی پاکستانی باؤلرز کے ڈر سے ایشیاء کپ 2018ء میں بھارتی کرکٹ ٹیم کا حصّہ نہیں ہیں۔ ورنہ اگر بھارتی سٹار بیٹسمین نے آرام ہی کرنا تھا۔ تو ایشیاء کپ کے بعد ویسٹ انڈیز کے ساتھ ہونے والی ہوم سیریز میں بھی کرسکتے تھے۔ جس میں ہمیشہ کی طرح بھارتی ٹیم کو تماشائیوں اور وکٹ کے علاوہ امپائرز کی بھی پوری سپورٹ حاصل ہوگی۔

Spread the love
  • 14
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں