عرس صوفی بزرگ خواجہ معین الدین چشتی,بھارت کا پاکستانی زائرین کو ویزا نہ دینے پر دفترِ خارجہ کا مایوسی کا اظہار

loading...

پاکستان اور بھارت کے درمیان مذہبی مقامات کی زیارت اور مذہبی رسومات میں شرکت کے لیے 1974 میں کیے جانے والے معاہدے کے باوجود 503 زائرین کو ویزے نہیں دیے گئے۔ دفترِ خارجہ کی جانب سے جاری ہونے والے اعلامیے میں کہا گیا ہے کہ پاکستان سے زائرین صوفی بزرگ کے عرس کے سلسلے میں 19 مارچ سے 29 مارچ تک بھارت جانا چاہتے تھے۔ رواں برس جنوری میں بھی بھارت کی جانب سے ویزے جاری نہ کرنے کی وجہ سے 192 پاکستانی زائرین حضرت خواجہ نظام الدین اولیاء کے عرس میں شرکت سے محروم ہوگئے تھے۔

دفترخارجہ نے مزید کہا کہ  بھارت کی جانب سے نہ صرف 1974 میں مذہبی مقامات کے لیے ویزا کے اجراء کے حوالے سے پاک بھارت معاہدے کی خلاف وزری کی گئی ہے بلکہ اس نے مذہبی آزادی کے بنیادی حقوق کی بھی خلاف ورزی کی ہے۔ ایسے اقدامات کی وجہ سے لوگوں کے درمیان رابطے کو بڑھانے، ماحول سازگار کرنے اور دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کو بہتر کرنے کی کوششوں کو ضرب لگتی ہے

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں