بھارت نے خیرسگالی طورپر خاتون سمیت پاکستانی شہریوں کو رہا کردیا

بھارت

لاہور:بھارت نے خیرسگالی طورپر خاتون سمیت 6 پاکستانی شہریوں کو رہا کردیا ۔بھارتی باڈر سکیورٹی فورس نے سزائیں مکمل کرنے والے پاکستانی شہریوں کو واہگہ بارڈرپرپاکستان رینجرز کے حوالے کیا ۔

بھارت سے رہا ہوکر آنے والوں میں اللہ دتہ، نسرین اختر، ہارون علی، محمدندیم، اختراسلام اور محمدیاسین شامل ہیں۔بھارت سے رہائی پانے والی لاہورکی رہائشی نسرین اختر 2006ء میں عرس میں شرکت کے لئے بھارت گئی تھیں تاہم اٹاری اسٹیشن پر انہیں منشیات اسمگل کرنے کے الزام میں گرفتار کر لیا گیا ۔

نسرین اخترکی والدہ نے پاکستانی اوربھارتی حکومت سے اپنی بیٹی کی رہائی کی اپیل کی تھی۔ نسرین اختر کو عائدکیا گیا جرمانہ پاکستانی ہائی کمیشن کی طرف سے اداکیا گیا ہے۔نسرین اخترکا کہنا ہے کہ وہ اپنی رہائی پر اللہ تعالی کی شکرگزارہیں، انہوں نے دونوں ملکوں کے حکام سے اپیل کی ہے کہ ایک دوسرے کی جیلوں میں قید سزائیں مکمل کرنے والے قیدیوں کو رہائی ملنی چاہیے۔دوسری جانب رہائی پانے والوں میں ایک نوجوان ہارون علی بھی شامل ہے جس کا ذہنی توازن درست نہیں ہے۔

loading...

ہارون علی کو دوسال پہلے غلطی سے سرحد پار کرنے کے الزام میں گرفتارکیا گیا اور اسے امرتسرسنٹرل جیل میں رکھا گیا تھا۔

مزید پڑھیں:بھارتی جیلوں میں سزا مکمل کرنے والے 52پاکستانی رہائی کے منتظر

نئی دہلی :بھارتی جیلوں میں 52 پاکستانی قیدیوں کی سزامکمل ہوچکی جورہائی کے منتظرہیں ٗترجمان پاکستانی ہائی کمیشن نئی دہلی خواجہ معاذ طارق کے مطابق پاکستان کے15شہری اور37مچھیریاپنی قید مکمل کرچکے ہیں ٗ

چھ پاکستانی قیدیوں کوبھارت سے رہاکرکے واہگہ پرپاکستانی حکام کے حوالے کر دیا گیا۔ترجمان کے مطابق رہائی پانیوالوں میں نسرین اختراورایک بھی بچہ شامل ہے۔

پاکستانی ہائی کمیشن نے جنوری2018 میں نسرین بی بی کا جرمانہ ادا کیا اور تمام افرادکی رہائی کیلئے بھارتی حکام سے بات کی۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں