سپریم کورٹ کا نواز شریف کے خلاف ٹرائل 3 ہفتے میں مکمل کرنے کا حکم

نوازشریف

اسلام آباد: سپریم کورٹ آف پاکستان نے نواز شریف کے خلاف ریفرنسز مکمل کرنے کے لیے مدت میں توسیع کی درخواست پر فیصلہ سناتے ہوئے 3 ہفتے میں ٹرائل مکمل کرنے کا حکم دے دیا۔

تفصیلات کے مطابق سابق وزیر اعظم نواز شریف کے خلاف ریفرنسز مکمل کرنے کے لیے مدت میں توسیع کی درخواست پر سماعت ہوئی۔ درخواست احتساب عدالت کی جانب سے بھیجی گئی تھی۔

درخواست پر سماعت چیف جسٹس پاکستان کی سربراہی میں 2 رکنی بینچ نے کی۔ سپریم کورٹ نے احتساب عدالت کو ریفرنس پر ٹرائل 3 ہفتے میں مکمل کرنے کاحکم دے دیا۔

چیف جسٹس ثاقب نثار کا کہنا تھا کہ العزیزیہ ریفرنس کا ٹرائل مکمل کرنے کے لیے مزید مہلت نہیں ملے گی۔ احتساب عدالت کو دی گئی مہلت 17 نومبر کو ختم ہوگئی تھی۔

احتساب عدالت کی درخواست میں کہا گیا تھا کہ سپریم کورٹ کی دی گئی ڈیڈ لائن میں ٹرائل مکمل کرنا ممکن نہیں، العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز میں ٹرائل مکمل ہونے کے قریب ہے۔

خط میں استدعا کی گئی کہ ٹرائل مکمل کرنے کے لیے مزید وقت دیا جائے۔ العزیزیہ میں ملزم کا بیان اور فلیگ شپ میں آخری گواہ پر جرح جاری ہے۔

اس سے قبل سپریم کورٹ ریفرنسز مکمل کرنے کے لیے پہلے ہی 5 بار مہلت میں توسیع کرچکی ہے، گزشتہ ماہ عدالت عظمیٰ نے 26 اگست تک ٹرائل مکمل کرنے کے لیے احتساب عدالت کو 6 ہفتوں کا وقت دیا تھا۔

Spread the love
  • 12
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں