نقیب اللہ بے گناہ قرار، ایس ایس پی راؤ انوار عہدے سے برطرف

گزشتہ دنوں پولیس مقابلے میں مارے جانے والے نقیب اللہ محسود کو تحقیاتی ٹٰیم نے بے گناہ قرار دے دیا، ایس ایس پی راؤ انوار کو عہدے سے بر طرف کر دیا گیا۔

گزشتہ دونوں ایس ایس پی راو انوار نے ایک پولیس مقابلے میں چار دہشت گردوں کو مارنے کا دعوایٰ کیا تھا۔ ان چار دہشت گردوں میں سے ایک نقیب اللہ محسود بھی شامل تھا۔ نقیب اللہ کی ہلاکت پر عوامی دباو کے بعد پولیس کی جانب کی تحقیقات کےلیے تین رکنی ٹیم  تشکیل دی گی۔

loading...

تحقیقاتی ٹیم نے اپنی ابتدائی رپورٹ پیش کرد ی ہے۔ جس میں نقیب اللہ محسود بے گنا قرار دیا گیا۔ رپورٹ میں ایس ایس پی ملیر راؤ انوار کو عہدے سے برطرف کرنے کی سفارش کے بعد راو انوار کو عہدے سے بطرف کر نے کےبعد نام ای سی ایل میں ڈال دیا گیا ہے۔  نجی ٹی وی چینل کے مطابق راؤ انوار کو برطرف کرنے کا نوٹیفیکشن جاری کر دیا گیا۔  اور ان کی جگہ ایس ایس پی عدیل چانڈیو کو چارج دے دیا گیا ہے۔

تاہم راو انوار نے نجی ٹی وی جیو نیوز سے بات کرتے ہوئے کہا کہ انہٰیں اپنے خلاف کی جانے والی کاروائی  انکی سمجھ سے باہر ہے کیونکہ وہ پولیس مقابلے کے بعد جائے وقوعہ پر پہچنے۔ اور مقابلے کا مقدمہ بھی ایس ایچ او شاہ لطیف مدعیت میں درج کیا گیا تھا۔ راو انوار نے تحقیقاتی کمیٹی کے رکن ڈی آئی جی پر تحفظات کا اظہار بھی کیا اور کہا کہ ثابت کریں گے کہ پولیس مقابلے جعلی نہیں تھا۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں