شاہد مسعود الزامات کیس: غیر مشروط معافی کے باوجود شاہد مسعود کا شو تین ماہ کے لیے بند

اینکر پرسن شاہد مسعود

شاہد مسعود صاحب آپ نے پھانسی مانگی تھی لیکن ہم آپ کو پھانسی نہیں دے رہے، چیف جسٹس

آج سپریم کورٹ میں زینب قتل کیس میں اینکر پرسن شاہد مسعود کی جانب سے ملزم عمران پر لگائے کہ الزامات کے ازخود نوٹس کی سماعت ہوئی۔ سماعت کے دوران چیف جسٹس ثاقب نثار شاہد مسعود پر کافی برہم نظر آئے، انہوں نے شاہد مسعود کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ آپ نے ہمارے لاء آفیسر کی توہین کی ہم دیکھتے ہیں کہ آپ کا شو کتنے دن چلتا ہے۔

loading...

چیف جسٹس ثاقب نثار نے شاہد مسعود کے وکیل کو بھی مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ اپنے موکل کو سمجھا لیں ورنہ ہمیں عزت کروانی آتی ہے۔ شاہد مسعود کے وکیل نے کہا کے انکے موکل غیر مشروط معافی مانگنے کے لیے تیار ہیں۔ جس پر چیف جسٹس کا کہنا تھا کہ شاہد مسعود صاحب آپ نے پھانسی مانگی تھی لیکن ہم آپ کو پھانسی نہیں دے رہے۔ تاہم عدالت نے شاہد مسعود کے پروگرام کو3 ماہ کے بند کرنے حکم دے دیا۔

یاد رہے کہ قصور میں زینب قتل کے مرکزی ملزم عمران کے گرفتار ہونے کے بعد شاہد مسعود نے اپنے ٹی وی شو میں دعویٰ کیا تھا کہ عمران علی ایک عالمی پورن گرافی گروہ کا حصہ ہے اور اس کے 37 بنک اکاؤنٹس ہیں۔ اور سپریم کورٹ سے نوٹس لینے کی درخواست کی تھی۔ سپریم کورٹ نے نوٹس لیتے ہوئے جے آئی ٹی سے تحقیقات کروائیں جس میں اینکر پرسن اپنے الزامات ثابت کرنے میں ناکام رہے تھے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں