شریف برادران کے حکم پرماڈل ٹاؤن میں خون کی ہولی کھیلی گئی , ڈاکٹر طاہر القادری

Dr-Tahir-Ul-Qadri-Aajkal
loading...

لاہور: پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ ڈاکٹر محمد طاہرالقادری نے کہا ہے کہ پنجاب پر مسلسل 10سال حکومت کرنے والوں کو اقتدار کے آخری سال بھی کسانوں پر رحم نہیں آیا

ڈاکٹر طاہر القادری نے کہا کہ پولیس سے ہماری براہ راست کوئی دشمنی نہیں تھی،شریف برادران کے حکم پر سانحہ ماڈل ٹاؤن میں خون کی ہولی کھیلی گئی اور سانحہ میں آؤٹ آف ٹرن ترقیوں،شولڈرز پروموشن کے حوالے سے لالچی حکمرانوں کے منظور نظر افسران،اہلکار آلہ کار بنے،ماڈل ٹاؤن کا قتل عام شریف برادران کے حکم پر ہوا۔ طلب کئے گئے افسران اور اہلکاروں کے پاس ابھی بھی وقت ہے اصل حقائق عدالت کو بتا دیں۔قاتل ٹولہ انہیں بطور بکرا استعمال کرنے کی پوری منصوبہ بندی رکھتا ہے ۔انہوں نے کہا کہ سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس میں شریف برادران اور حواریوں کو شامل ٹرائل کرنے سے ہی انصاف کے تقاضے پورے ہونگے۔

ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ قومی خزانہ لوٹنے والوں، ٹیکس چوروں، کمیشن خوروں کے کالے دھن کو سفید کرنے کیلئے ایمنسٹی سکیمیں دینے والوں کو غریب چھوٹا کاشتکار نظر کیوں نہیں آتا؟اقتدار کی آخری گھڑیوں میں کسانوں، مزدوروں کیلئے کوئی سکیم آتی تو تمام تر اختلافات کے باوجودتعریف کرتے موجودہ حکمرانوں کو کسانوں، مزدوروں، کلرکوں اور کم آمدنی والے طبقات کی کبھی پروا نہیں رہی

 انہوں نے کہا کہ کسان، مزدور،تاجر، صنعتکار، سیاسی، سماجی کارکن پوچھ رہے ہیں زرعی ،صنعتی شعبہ تباہ ہو چکا،5سال میں اربوں ڈالر کا لیا گیا قرضہ کہاں خرچ ہوا؟ ڈاکٹر طاہرالقادری نے کہا کہ حکمران ساڑھے بارہ ایکڑ تک کے کاشتکاروں کو 45 من فی ایکڑ کے حساب سے باردانہ دے اور کسانوں سے گندم کا دانہ دانہ خریدا جائے۔ دریں اثناء پاکستان عوامی تحریک کے سربراہ نے عوامی تحریک کے وکلاء سے سانحہ ماڈل ٹاؤن کیس کے حوالے سے بریفنگ لی،مستغیث جواد حامد اور نعیم الدین چوہدری ایڈووکیٹ نے بریفنگ دی

مزید پڑھیں۔  لاہور،روزہ داروں کو ناقص خوراک مہیا کرنے والے 21فوڈ پوائنٹس سیل کر دیے گئے

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں