دانتوں کو نقصان پہنچانے والی 9 اشیاء

ہم سب یہ جانتے ہیں کہ ہماری غذا ہمارے جسم کے ساتھ ساتھ ہمارے دانتوں کی صحت میں بھی براہ راست کرداراداکرتی ہے۔ ہم جوکھاتے اورپیتے ہیں اس کے اثرات ہمارے جسم کے ساتھ ساتھ دانتوں پربھی ہوتے ہیں۔ دانتوں کوخراب کرنے والی ان 9 غذاؤں کا تذکرہ کرنے سے پہلے یہ میکانزم جاننا ضروری ہے کہ دواہم چیزیں ہیں جوہمارے دانتوں پراثرانداز ہوتی ہیں ا یک چینی اوردوسرا ایسڈ۔ یاد رکھیں کہ کوئی بھی غذااورمشروب جوان پرمشتمل ہواس سے دانتوں کوشدید نقصان پہنچے گا۔

دانتوں کونقصان پہنچانے والی اشیاء:

1- رسیلے پھل

رسیلے پھل صحت بخش ہوتے ہیں لیکن اگرانھیں بہت زیادہ مقداراورکم وقفے سے استعمال کیاجائے تویہ منہ میں ایسڈ کی سطح کوبڑھادیتے ہیں۔اس سے دانتوں کو نقصان پہنچانے والاعمل جاری رہتاہے۔

2- خشک میوہ جات

یہ بہت سے لوگوں کے لئے حیرت انگیز بات ہوگی کیونکہ خشک میوہ جات کوصحت بخش غذا تصورکیا جاتا ہے۔خشک میوہ جات کے ساتھ مسئلہ یہ ہے کہ یہ بہت چپکنے والے ہوتے ہیں اوراس میں قدرتی طورپرشکرکی وافر مقدارپائی جاتی ہے۔ یہ دونوں چیزیں کیوٹی کاباعث بنتی ہیں۔ یہ منہ کوخشک،دانتوں کی سڑن اورمسوڑھوں کی بیماری کاسبب بنتے ہیں۔ بعض اوقات یہ اتنے سخت ہوتے ہیں کہ دانتوں کے فریکچرکاباعث بنتے ہیں۔

3-آلو کے چپس

آلوکے چپس میں کاربوہائیڈریٹس وافر مقدار میں ہوتے ہیں جوتمام چینی والی مصنوعات کی طرح نقصان دہ ہوتے ہیں۔ اس میں تیل کی مقداربھی زیادہ ہوتی ہے جس کی وجہ سے یہ دانتوں پر چپک جاتے ہیں جو دانتوں کوخراب کرتے ہیں۔ اسنیک کے طورپران کااستعمال آپ کے جسم اوردانتوں دونوں کے لئے خطرناک ہے۔

loading...

4- چپکنے والی/ سخت کینڈی اورچاکلیٹ

بنیادی طورپرکینڈی کی تمام اقسام دانتوں کے لئے سخت نقصان دہ ہیں۔ اس میں کوئی غذائیت موجود نہیں ہوتی بلکہ یہ براہ راست دانتوں پراثراندازہوتی ہے۔ چپکنے والی کینڈیز دانتوں کی جڑوں اورکناروں میں لگی رہ جاتی ہیں اوردانتوں کے فریکچراورکیوٹی کا سبب بنتی ہیں۔

5- بسکٹ

بسکٹ ایک ایسی چیز ہے جسے لوگ نقصان دہ تصورنہیں کرتے۔ بعض مطالعات کے مطابق بسکٹ بھی کینڈیز کی طرح ہی نقصان دہ ہوتے ہیں کیونکہ ان میں چینی کی وافرمقدارپائی جاتی ہے۔یہ دانتوں میں چپک کرطویل عرصے تک دانتوں میں لگے رہتے ہیں اور دانت خراب کرتے ہیں۔

6- چائے /کافی

شکراورایسڈک مواد پرمشتمل ہونے کی وجہ سے چائے اورکافی میں رنگ موجود ہوتا ہے جودانتوں پرداغ آنے کا سبب بنتا ہے۔ چینی اورایسڈ کے اثرات بیان کئے جاچکے ہیں لیکن چائے اورکافی سے آنے والے داغ آپ کے دانتوں کی خوبصورتی پرلمبے عرصے تک اثرانداز ہوتے ہیں۔ اس سے دانت پیلے نظرآتے ہیں اوروقت کے ساتھ یہ داغ مستقل اورگہرے پڑجاتے ہیں۔

7-  انرجی ڈرنکس

انرجی ڈرنکس بھی چینی اورایسڈ پرمشتمل ہوتی ہیں۔ کچھ انرجی ڈرنکس میں ایسڈ کی مقداربہت زیادہ ہوتی ہے۔ یہ ایسڈ دانتوں کی ساخت کونقصان پہنچاتا ہے۔ یہ اینامل، دانتوں کی سفید بیرونی تہہ کوپتلا کرکے انھیں حساس بنانے کے ساتھ ساتھ کیوٹی کاباعث بنتا ہے۔ اینامل کے پتلاہونے کی وجہ سے سامنے کے دانت آسانی سے ٹوٹ بھی سکتے ہیں۔

8- پھلوں کا جوس

اگرچہ یہ مندرجہ بالامشروبات کی طرح نقصان دہ نہیں ہیں لیکن پھلوں کے جوس بھی چینی اورایسڈ سے بھرپورہوتے ہیں۔عام ڈبے والے جوس کے سوفیصد بہترمتبادل موجود ہیں۔ اسی لئے ایسے مشروبات کاانتخاب کریں جس میں چینی اورایسڈ کی کم مقدارپائی جاتی ہو۔

9- الکحل

دانتوں اور منہ کی صحت کونقصان پہنچانے میں شراب اہم کرداراداکرتی ہے۔ یہ منہ میں پانی کی کمی کاباعث بنتی ہے اور تھوک میں کمی کرکے منہ کوخشک کرتی ہے۔ منہ کی خشکی دانتوں کی سڑن اورمسوڑھوں کے امراض کی طرف جاتی ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ منہ سے گندی بوآنے کاسبب بھی بنتی ہے۔

Spread the love
  • 1
    Share

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں