سندھ ہائیکورٹ کا شادی شدہ خواتین کو گھر سے نکالنے کے واقعات کا نوٹس

سندھ ہائیکورٹ
loading...

سندھ ہائیکورٹ نے گھریلو تنازعات پر خواتین کو گھر سے نکالے جانے کے واقعات کا نوٹس لے لیا۔

عدالت عالیہ نے خاتون کو بے گھر کرنے کے خلاف درخواست کی سماعت کی۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ شادی شدہ خواتین کو بے دخل کیے جانے کے واقعات میں اضافہ المیہ ہے، اسلامی معاشرے میں خواتین کو دھکے کھانے کے لیے نہیں چھوڑا جاسکتا اور اسلام خواتین کو مکمل تحفظ فراہم کرتا ہے۔

عدالت نے کہا کہ بیوی سے علیحدگی اختیار کرنے سے نان و نفقہ کی ذمہ داری ختم نہیں ہوتی جب کہ شوہر سے علیحدگی اختیار کرنے والی خواتین کو بھی نان و نفقہ ملنا چاہیئے اس لیے گھروں سے نکالی گئی شادی شدہ عورتوں کے تحفظ کے لیے قانون سازی کی جائے۔

عدالت نے بے گھر ہونے والی خواتین کے معاملے پر اٹارنی جنرل، ایڈوکیٹ جنرل اور چیف سیکرٹری سندھ کو نوٹس جاری کرتے ہوئے سینئر وکلاء مشتاق میمن اور خالد جاوید کو عدالتی معاون مقرر کردیا۔

Spread the love
  • 4
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں