نواز شریف کے خلاف فیصلہ آنے سے پہلے (ن) لیگ نے حکمت عملی تیار کرلی

نواز شریف

اسلام آباد: مسلم لیگ (ن) نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے خلاف احتساب عدالت کے فیصلے سے قبل حکمت عملی تیار کرلی۔

قائد مسلم لیگ (ن) نواز شریف اور پارٹی صدر شہباز شریف کی زیرصدارت پارٹی کا اجلاس پارلیمنٹ ہاؤس میں ہوا جس میں احتساب عدالت کے فیصلے اور موجودہ سیاسی صورتحال پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

ذرائع کے مطابق اجلاس میں فیصلہ کیا گیا کہ احتساب عدالت کی جانب سے نواز شریف کے خلاف فیصلہ آنے کی صورت میں (ن) لیگ کا ایڈوائزری بورڈ معاملات دیکھے گا جس میں قومی اسمبلی اور سینیٹ کے مرکزی رہنما شامل ہوں گے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ شہباز شریف مشاورت کے بعد ایڈوائزری بورڈ کے ناموں کی منظوری نواز شریف سے لیں گے اور کل تک ایڈوائزری بورڈ تشکیل دے دیا جائے گا۔

ذرائع کے مطابق نواز شریف نے 23 مارچ تک مسلم لیگ (ن) کی تنظیم سازی مکمل کرنے کی ہدایت کرتے ہوئے سوشل میڈیا کو بھی متحرک کرنے کی ہدایت کی۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس کے دوران مریم اورنگزیب کی سربراہی میں ایک کمیٹی تشکیل دی گئی جو میڈیا سے رابطہ رکھنے کے علاوہ حکومت کی جانب سے سوشل میڈیا پر کیے جانے والے پروپیگنڈے کا جواب دے گی۔

اجلاس سے قبل سابق وزیراعظم نواز شریف نے اپنے چھوٹے بھائی شہباز شریف سے ون آن ون ملاقات بھی کی جس کے دوران احتساب عدالت کے متوقع فیصلے سمیت دیگر امور پر تبادلہ خیال کیا گیا۔

مزید پڑھیں: نواز شریف اور شہباز شریف کے درمیان ون آن ون ملاقات

ذرائع کا کہنا ہے کہ ملاقات کے دوران شریف برادران نے احتساب عدالت کا فیصلہ حق میں آنے کی صورت میں خاموش اور خلاف آنے پر عوامی رابطہ مہم چلانے پر اتفاق کیا۔

یاد رہے کہ اسلام آباد کی احتساب عدالت نے گزشتہ روز نواز شریف کے خلاف العزیزیہ اور فلیگ شپ ریفرنسز پر فیصلے محفوظ کیے جو 24 دسمبر کو سنائے جائیں گے۔

احتساب عدالت کی جانب سے پہلے ہی ایون فیلڈ ریفرنس میں نواز شریف کو 10 سال قید و جرمانے کی سزا سنائی جاچکی ہے جسے بعدازاں اسلام آباد ہائیکورٹ نے معطل کیا۔

سابق وزیراعظم نواز شریف

(Visited 1 times, 1 visits today)

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں