روپے کے مقابلے میں ڈالر کی قیمت میں اضافہ معیشت کے لیے نقصان دہ ہے، تاجر برادری پریشان

حکومت حالات سے نمٹنے کیلئے فی الفور مشاورت کا عمل شروع کرے، اے پی سی بلائی جائے‘ صدر اشرف بھٹی

آل پاکستان انجمن تاجران کے صدر اشرف بھٹی نے ڈالر کے مقابلے میں پاکستانی روپے کی بے قدری اور ہیجان کی کیفیت کو معیشت کیلئے انتہائی نقصان دہ قرار دیتے ہوئے کہا ہے کہ حکومت موجودہ حالات میں فی الفور مشاورت کا عمل شروع کرے۔ اپنے ایک بیان میں انہوں نے کہا کہ معیشت کسی بھی ملک کی بقاء کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتی ہے اور حالیہ کچھ ماہ میں بے یقینی اور ہیجان کی کیفیت کی وجہ سے معیشت پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔

loading...

اشرف بھٹی نے کہا کہ اچانک ڈالر کی قیمت میں بے پناہ اضافے اور روپے کی بے قدری سے ہر طبقے میں بے چینی کی لہر دوڑ گئی ہے ،حکومت اس حوالے سے فوری وضاحت جاری کرے اور حالات سے نمٹنے کیلئے عملی اقدامات کئے جائیں۔ انہوں نے کہا کہ موجودہ حالات کی وجہ سے نہ صرف بیرونی بلکہ اندرونی سرمایہ کاری بھی متاثر ہونے کا خدشہ ہے جس کے لا محالہ اثرات معیشت پر مرتب ہوں گے۔

تجویز ہے کہ حکومت فی الفور معاشی ماہرین ،صنعتکاروں اور تاجروں سمیت معیشت میں کردار ادا کرنے والے ہر شعبے کے نمائندہ افراد کی آل پارٹیز کانفرنس طلب کر کے آئندہ کے حوالے سے حکمت علی مرتب کرے ۔

واضح رہے کہ پچھلے کچھ روز سے ڈالر کی قیمت میں مسلسل  اضافہ دیکھنے میں نظر آ رہا ہے، اب تک ایک ڈالر 115 روہے کا ہوگیا ہے، جس سے کاروباری لوگوں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے۔ اور دوسرے جانب حکومت کی طرف سے کوئی خاطر خواہ انتظامات نہیں کیے گئے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں