ضمنی انتخابات کا دوسرا مرحلہ: قومی و صوبائی اسمبلی کے 3 حلقوں میں پولنگ مکمل، ووٹوں کی گنتی جاری

ضمنی انتخابات

قومی اسمبلی کے حلقے این اے 247، سندھ اسمبلی کے حلقے پی ایس 111 اور خیبر پختونخوا اسمبلی کے حلقے پی کے 71 پر ضمنی انتخاب کے لیے پولنگ کا عمل مکمل ہوگیا جس کے بعد ووٹوں کی گنتی جاری ہے۔

کراچی سے قومی اسمبلی کے حلقے این اے 247 پر صدر مملکت ڈاکٹر عارف علوی نے عام انتخابات میں کامیابی حاصل کی تھی جبکہ پی ایس 111 پر گورنر سندھ عمران اسماعیل فاتح قرار پائے تھے تاہم عارف علوی اور عمران اسماعیل کے منصب سنبھالنے کے بعد یہ نشستیں خالی ہوئیں جن پر آج ضمنی انتخاب کے لیے پولنگ ہوئی۔

پاکستان تحریک انصاف کی جانب سے این اے 247 پر آفتاب صدیقی، ایم کیو ایم کی طرف سے صادق افتخار، پاکستان پیپلز پارٹی کی جانب سے قیصر خان نظامانی اور پاک سرزمین پارٹی کے ارشد وہرہ میدان میں تھے۔

دوسری جانب پی ایس 111 پر تحریک انصاف کے شہزاد قریشی، پی ایس پی کے یاسرالدین، ایم کیو ایم پاکستان کے جہانزیب مغل، پاکستان پیپلز پارٹی کے فیاض پیرزادہ اور آزاد امیدوار جبران ناصر مدمقابل تھے۔

loading...

الیکشن کمیشن آف پاکستان کے مطابق این اے247 میں رجسٹرڈ ووٹرز کی تعداد 5 لاکھ 46 ہزار 451 اور پی ایس111  میں ووٹرز کی تعداد  ایک لاکھ 78 ہزار 965 تھی۔

الیکشن کمیشن کے مطابق این اے 247 کے لیے 240 پولنگ اسٹیشنز اور پی ایس 111 کے لیے 80 پولنگ اسٹیشنز بنائے گئے تھے۔

پشاور میں خیبرپختونخواء اسمبلی کے حلقے پی کے 71 کی نشست گورنر خیبر پختونخواء شاہ فرمان نے عہدہ سنبھالنے کے بعد چھوڑی تھی۔

اس حلقے میں ضمنی انتخابات میں گورنر خیبرپختونخواء کے بھائی سمیت 5 امیدوار مدمقابل تھے۔

شاہ فرمان کے بھائی ذوالفقار خان کا اصل مقابلہ عوامی نیشنل پارٹی کے صلاح الدین سے تھا جبکہ تین آزاد امیدوار بھی انتخابی دنگل میں حصہ لے رہے تھے۔

اس حلقے میں کل ووٹرز کی تعداد ایک لاکھ 33 ہزار 451 تھی جن میں مرد ووٹرز 79 ہزار 836 اور خواتین ووٹرز 53 ہزار 615 تھیں۔

اسی طرح حلقے میں کُل پولنگ اسٹیشنز کی تعداد 86 تھی جن میں 48 مردوں اور 35 خواتین کے لیے مختص تھے۔ اس حلقے کے 51 پولنگ اسٹیشنز کو حساس ترین قرار دیا گیا تھا۔

Spread the love
  • 5
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں