عمران خان کے سو دن سو یوٹرن ثابت ہوئے، احسن اقبال

احسن اقبال
loading...

کراچی: مسلم لیگ (ن) کے سینئر رہنما احسن اقبال نے کہا ہےکہ ہم عمران خان کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتے وہ جتنے مرضی کیس بنائیں ہم ان کا دفاع کریں گے۔

کراچی ائیرپورٹ پر میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے احسن اقبال نے کہا کہ 2013 میں پوری دنیا پاکستان کو خطرناک ملک قرار دیتی تھی لیکن ہم نے دنیا کو بتایا تھا کہ پاکستان نے بہادری کے ساتھ دہشتگردی کو شکست دی ہے، ہم نے ثابت کیا تھا کہ پاکستان اپنے وسائل سے توانائی بحران کو شکست دے سکتاہے، ہماری اس کامیابی کو عمران خان کی نگرانی اور قیادت میں ایک سیاسی سازش کے ذریعے ناکام کیاگیا۔

انہوں نے کہا کہ ہماری حکومت نے پانچ سال ترقی کا سفر طے کیا ہے، اس وقت حکومت نے پاکستان کے حوالے سے دنیا بھر میں منفی پروپیگینڈا شروع کیا ہوا ہے، عمران خان کہتے تھے سی پیک کے منصبوں میں کرپشن ہوئی، چین جاکر انہوں نے سی پیک کا قصیدہ پڑھا اور پاکستان آکر سی پیک کے منصوبوں پر کیچٹر اچھالتے ہیں۔

(ن) لیگ کے رہنما کا کہنا تھا کہ ہمارے ہاتھ صاف ہیں، ہم آپ کی دھمکیوں سے نہیں ڈرنے والے، اگر آپ سمجھتے ہیں اپنی ناکامیوں کو ہماری گرفتاری سے چھپالیں گے تو آپ کی بھول ہے، ہم آپ کو چھپنے نہیں دیں گے اور قوم کو بتائیں گے اناڑی اناڑی ہی ہوتاہے، آج ملک میں مہنگائی کا پہاڑ عوام پر ڈھا دیا گیا ہے جس میں حکومت کی ناتجربےکاری ہے۔

احسن اقبال نے مزید کہاکہ دو ماہ پہلے عمران خان کہا کرتے تھے خودکشی کرلوں مگر آئی ایم ایف کے پاس نہیں جاؤں گا، کیا دو ماہ پہلے انہیں درآمدات کے اعدادوشمار معلوم نہ تھے؟ عمران خان قرضے لے رہے ہیں، ان کا پلان بی کیا ہے؟ وہ قوم کو بے وقوف بنا رہے ہیں، انہوں نے قوم کو دھوکا دے کر یہ مقام حاصل کیا۔

سابق وفاقی وزیر کا کہنا تھا کہ عمران خان کے سو دن سو یوٹرن ثابت ہوئے، ہم ان کو حکومت کرنے دینا چاہتے ہیں، قوم کو روزانہ ان کے یوٹرن کی قیمت ادا کرنے پڑرہی ہے۔

میاں نوازشریف کی خاموشی سے متعلق سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہاکہ میاں نوازشریف آپ کے سامنے کھڑے بول رہے ہیں، ہم سب نوازشریف ہیں، نوازشریف کوئی معمولی کارکن نہیں، جب وہ بولیں گے تو یوٹرن نہیں ہوگا، ہم نہیں چاہتے ملک میں درجہ حرارت اتنا بڑے جس سے یہ حکومت لوگوں کو یہ تاثر دے کہ اپوزیشن ہمیں حکومت نہیں کرنے دے رہی، ہم چاہتے ہیں کہ حکومت عوام سے کیے وعدے پورے کرے، عمران خان کی تو پوری کوشش ہےکہ وہ سیاسی شہید بنیں اور لوگوں کو کہیں کہ اپوزیشن ٹانگیں کھینچ رہی ہے، اگر ہمیں ٹانگیں کھینچنا ہوتیں تو مظاہروں میں پیٹرول چھڑکنے کے لیے آتے جیسے آپ نے فیض آباد میں کیا، ہم واقعی آپ کو موقع دینا چاہتے ہیں تاک لوگ آپ کو پرکھ سکیں۔

انہوں نے مزید کہاکہ عمران خان لوگوں کو بے وقف نہ بنائیں، یہ پہلی اپوزیشن ہے جو حکومت کو کہہ رہی ہےکام کرو اور حکومت کام کرنے کے لیے تیار نہیں۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ جس نے بھی پاکستان کی دولت لوٹی اس کے خلاف بھرپور کارروائی ہونی چاہیے، اس کے لیے شفاف احتساب کا نظام قائم کیا جانا چاہیے، ہمارا یہ مؤقف پانچ سال سے ہے، اپنے دور میں احتساب کے نظام میں اصلاحات نہیں کرسکے کیونکہ سینیٹ میں مطلوبہ تعداد نہیں تھی اور پیپلزپارٹی کے ساتھ اس مسئلے پر اتفاق نہیں ہوسکا، اب پی پی اور ن لیگ نے پی ٹی آئی کے ساتھ مل کر کام شروع کیا ہے تاکہ احتساب کا شفاف نظام بنائیں جو غیر متنازع ہو۔

لیگی رہنما نے کہا کہ عمران خان اپوزیشن پر جو انگلیاں اٹھاتے ہیں کاش اپنے گریبان میں جھانکیں، ملک میں کرپشن کے جتنے مگر مچھ ہیں سب پی ٹی آئی کی چھتری کے نیچے پناہ میں ہیں، آج عمران خان تمام کرپٹ سیاسی عناصر کی پناہ گاہ ہیں اور دوسروں پر انگلیاں اٹھاتے ہیں۔

لیگی رہنما کا کہنا تھا کہ ہم عمران خان کی دھمکیوں سے نہیں ڈرتے، ان کے پاس کارکردگی زیرو ہے، وہ صرف تھیٹریکل اور سنسنی خیزی کے ذریعے چاہتے ہیں جگہ ملتی رہے، یہ جتنی مرضی کیس بنائیں ہم ان کا دفاع کریں گے، ہم جھوٹے کیسز سے نہیں ڈرتے۔

ایک سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہا کہ ن لیگ میں کوئی اختلاف نہیں، سب کا قیادت پر اتفاق ہے، سب نوازشریف کے سپاہی ہیں، ہر کارکن شہبازشریف کی صدارت اور نوازشریف کی قیادت پر یکسو ہے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں