طالبان رہنماوں کو گرفتار یا ملک بدر کیا جائے، امریکہ کا پاکستان سے مطالبہ

loading...

افغانستان کے دارالحکومت میں ہفتے کو دہشت گردوں نے انٹر کانٹی نینٹل ہوٹل پر حملہ کر دیا تھا اور افغان سیکیورٹی فورسز کو ہوٹل کی عمارت پر قبضہ کرنے والے دہشت گردوں کو مارنے میں 12 گھنٹے تک آپریشن کرنا پڑا تھا۔

اس حملے کے فوری بعد پاکستان پر الزام لگایا جانے لگا تھا، لیکن پاکستان کے دفتر خارجہ نے اسے یکسر مسترد کیا تھا۔ اور پاکستان کے جانب سے کہا گیا تھا کہ پاکستان اس حملے کی تحقیقات کا مطالبہ کرتا ہے۔ پاکستان نے حملے میں  ہونے  والی ہلاکتوں پر افسوس کا اظہار کرتے ہوئے دہشت گردی کے خاتمے کے لیے دونوں ملکوں کے درمیان تعاون کی ضرورت پر زور دیا تھا۔

لیکن امریکہ کی جانب سے پاکستان سے دہشت گردی کے خلاف مزید اقدامات کرنے کا مطالبہ کیا گیا ہے۔ امریکی صدر کی ترجمان سارہ سینڈرز نے پیر کو پریس بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ شہریوں پر حملے سے امریکا کا افغانستان کے ساتھ کام کرنے کا عزم مزید پختہ ہو گا۔ سارہ سینڈرز نے مزید کہا کہ ہم پاکستان سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ فورہ طور پر افغان رہنماؤں کو گرفتار یا ملک بدر کرے اور پاکستان کو دہشت گردوں کو حملوں کے لیے اپنی سرزمین کے استعمال سے روکنا ہو

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں