نیب والے قومی خزانے کو خرچ کر کے باہر سیر سپاٹا کر کے واپس آجاتے ہیں،نواز شریف

احتساب عدالت
loading...

پاکستان مسلم لیگ (ن)کے صدر ٗ سابق وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ نیب والے قومی خزانے کو خرچ کر کے باہر سیر سپاٹا کر کے واپس آجاتے ہیں ٗ جب ثبوت نہیں ملتا تو معاملے کو ختم کر دینا چاہیے ٗ سڑک بنانے پر شاباش ملنی چاہیے یہ پوچھتے ہیں سڑک کیوں بنائی ؟جو ملک میں ترقی کی راہ ہموار کرتا ہے اس کیخلاف کیسز اور آئین توڑنے والے کو کھلی چھٹی ہے ٗرینب واقعہ افسوسناک ہے اس پر سیاست نہ کی جائے ٗ میرے کیس اور دوسروں کے خلاف کیسز میں فرق صرف لاڈلے کا ہے ٗ بہت جلد عدالتوں میں زیر التوا کیسز کے حوالے سے بات کروں گا ٗ ہسپتالوں میں ضرور جائیں مگر اپنے گھر کا بھی حساب رکھیں ٗعدلیہ میں ریفارمز کی ضرورت ہے ٗبھائیوں میں آج تک تقسیم ہوئی نہ ہی ہوگی، ہمارے آپس میں تنازعات کی خبریں پھِیلائی جاتی رہی ہیں ٗ ہماری جماعت کے بیانیے سے پوری پارٹی متفق اور یکسو ہے، پارٹی مکمل طور پر متحد ہے ٗ انتخابات ہوں گے، اس میں مجھے کوئی شک نہیں۔ منگل کو سابق وزیراعظم نوازشریف نے نیب کورٹ رپورٹرز ایسوسی ایشن سے بات چیت کرتے ہوئے کہاکہ جو ضمنی ریفرنس لائے جارہے ہیں ان کا مقصد کیا ہے؟ معاملہ جب ختم ہونے کی طرف جارہا ہے تو اسے کیوں لٹکایا جا رہا ہے؟ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ نیب والے قومی خزانے کو خرچ کرکے باہر جاتے ہیں اور سیر سپاٹا کرکے واپس آ جاتے ہیں ٗجب ثبو ت نہیں ملتا تو معاملے کو ختم کردینا

چاہیے ۔ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ایک ریفرنس کے بعد دوسرا ریفرنس دائر کر دیا جاتا ہے ٗآئے دن ریفرنس میرے اور شہباز شریف کے خلاف دائر کئے جا رہے ہیں ٗسڑک بنانے پر شاباش ملنی چاہیے ٗ یہ پوچھتے ہیں سٹرک کیوں بنائی؟ سابق وزیر اعظم نے کہا کہ ساری قوم جانتی ہے کہ یہ سب کیا ہو رہا ہے ٗعوام نے سپریم کورٹ کے فیصلے کو ابھی تک قبول نہیں کیا ٗپوری قوم اس فیصلے کو مسترد کر چکی ہے۔نواز شریف نے کہا کہ پہلے دن سے پتہ تھا کہ اس کیس میں کچھ نہیں ہے ٗکوئی کرپشن ، سرکاری عہدے کا ناجائز استعمال یا اپنے منصب کا غلط استعمال نہیں کیا۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں