پاکستان میں صرف آئین کی پاسداری ہوگی،جوڈیشل مارشل لاء کا آئین میں کوئی تصور نہیں:چیف جسٹس پاکستان

لاہور میں میڈیا سے بات کرتے ہوئے چیف جسٹس پاکستان  نے کہا کہ ہم نے بھی آئین کے تحفظ کا حلف اٹھایا ہے، قسم کھاتا ہوں کہ اس ملک میں جمہوریت کو کوئی نقصان نہیں ہے،جمہوریت کو ڈی ریل نہیں ہونے دیں گے، پاکستان میں صرف آئین کی پاسداری ہوگی، اس ملک کو آئین اور قانون کے مطابق چلنا ہے، جوڈیشل مارشل لاء کا آئین میں کوئی تصور نہیں، انہوں نے کہا کہ کسی کو کوئی شک نہ ہو انصاف بلا تفریق ہوگا اور اس ملک میں انصاف بلا تفریق ہوتا دکھائی دے گا۔

مزید:چیف جسٹس نے ہربنس پورہ میں پارک کی جگہ گرڈ اسٹیشن بنانے پر از خود نوٹس لے لیا
جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دورکنی بنچ سماعت کریگا،حکام طلب
لاہور:چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار نے ہربنس پورہ میں پارک کی جگہ گرڈ اسٹیشن بنانے کا نوٹس لیتے ہوئے متعلقہ حکام کو  ( ہفتہ) کے روز طلب کرلیا۔چیف جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں دورکنی بنچ ازخود نوٹس کیس پر سماعت کرے گا۔عدالت عظمی نے چیئرمین واپڈا اور ڈائریکٹر جنرل ایل ڈی اے ، صوبائی سیکرٹری اطلاعات اور سینئر ممبر بورڈ آف ریونیو کو بھی آج طلب کرلیا۔واضح رہے کہ جمعرات کے روز چیف جسٹس نے سابق وزیر خزانہ اسحاق ڈار کی رہائش گاہ کے لیے پارک اکھاڑ کر سڑک بنانے کے از خود نوٹس کیس کی سماعت کے دوران ڈی جی ایل ڈی اے کو 10 روز میں پارک اصل شکل میں بحال کرنے کا حکم دیا تھا

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں