بالی ووڈ فلم1921، “ریویو”

1921 فلم

ہندی فلم1921 ایک ڈراؤنی اور تھرلر فلم ہے۔ جسے فلم ڈائریکڑ وکرم دھت نے ڈائریکٹ کیا ہے۔ زرین خان اور کرن کندرا  نے اس فلم میں مرکزی کردار ادا کیا ہے۔

1921 فلم کی کہانی کرن کندرا جن کا فلمی نام آیوش ہے اور روز یعنی زرین خان کے گرد گھومتی ہے۔ آیوش انڈیا سے لندن موسیقی سیکھنے جاتے ہیں۔ لندن میں آیوش جس گھر میں رہتا ہے۔ وہ اس کے باپ کے باس کا گھر ہے۔ شروع کے دنوں میں آیوش کی زندگی اچھی گزر رہی تھی۔ وہ موسیقی سیکھنے کالج جاتا ہے اور واپس آ کر پیانو بجاتا ہے۔ اس کا میوزک سننے لوگ اس کے گھر آنا شروع کر دیتے ہیں۔ زرین خان بھی آیوش کا میوزک سنتی ہے اور اس سے پیار کرنے لگتی ہے۔ جسکا آیوش کو نہیں پتا ہوتا۔  لیکن فلم میں موڑ اس وقت آتا ہے۔ جب وہ گھر جس میں آیوش رہ رہا ہوتا ہے۔ بھوتوں یا روحوں کے زیر اثر آ جاتا ہے۔ یہ بھوت طرح طرح سے آٰیوش کو تنگ کرنے لگتے ہیں۔ جس سے آیوش بہت ڈر جاتا ہے اور “روز” یعنی زرین خان سے مدد مانگتا ہے۔ روز جو کے بچپن سے ہی روحوں کو دیکھ سکتی ہے اور ان سے بات کر سکتی ہے۔

فلم1921 بنائی لندن میں ہی گئی ہے۔ اس لیے اصل لوکیشنز کے دستیاب ہونے کی وجہ سے فلم کے سینز اچھے ہیں۔

فلم کے پروڈیوسر کا بنیادی مقصد ایک ڈراؤنی اور تھرلر فلم بنانا تھا۔ لیکن فلم میں جابجا ایسی باتیں ہیں۔ جو فلم کو کمزور بناتی ہیں اور اسے اس کے اصل موضوع سے ہٹا دیتی ہیں۔  جیسے فلم1921 کی کہانی بہت لمبی ہے۔ جیسے جیسے فلم آگے بڑھتی ہے۔ اپنے اصل موضوع کے ساتھ ساتھ ایک پیار کی کہانی بن جاتی ہے اور کچھ جگہوں پر کہانی میں ربت ٹوٹتا ہوا محسوس ہوتا ہے۔

1921-movie-review-aajkal-jpg

زرین خان کو فلم کے شروع میں دکھایا گیا ہے۔ وہ روحوں سے بات کر سکتی ہے۔ لیکن فلم جیسے آگے بڑھتی ہے۔ تو ایسا کچھ نظر نہیں آتا۔ بلکہ زرین خان اور کرن کندرا دونوں مل کر ہی کرن کو تنگ کرنے والی روحوں کو ڈھونڈ رہے ہوتے ہیں اور فلم کے آخر میں پتا چلتا ہے کہ آیوش کو تنگ کرنے والی روح روز یعنی زرین خان کی دوست کی ہے۔ جو زرین خان سے  آیوش کو مار کر بدلنا لینا چاہتی ہے کیونکہ زرین خان آیوش سے پیار کرتی ہے۔

1921 فلم کی ایک اور عجیب بات یہ ہے کہ  زرین خان جسکا دعویٰ ہے کہ وہ بچپن سے ہی روحوں سے باتیں کر سکتی ہے اور لوگوں کو تنگ کرنے والی روحوں سےلوگوں کو بچا سکتی ہے۔ خود اپنی جان دے کر آٰیوش کو بچاتی  ہے۔

zareen Khan-1921-aajkal-review-jpg

اسی لیے یہ فلم لوگوں کو بہت زیادہ متاثر کرنے میں ناکام رہی ہے۔ لیکن اس فلم میں زرین خان نے بہترین اداکاری کی ہے۔ کرن کندرہ کی اداکاری بھی باقی فلم کی طرح بہت اچھی نہیں تھی۔

لہذا اگر آپ میں مسلسل 2 گھنٹوں کے لیے بور ہونے کی حمت ہے تو اس فلم کو دیکھنے جا سکتے ہیں وگرنہ پرہیز کریں۔

فلم کا ٹریلر دیکھیں۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں