درندہ صفت ملزم عمران انسدادِ دہشتگردی عدالت میں پیش

ملزم عمران
loading...

لاہور: قصور میں معصوم زینب کے قتل کے الزام میں گرفتار ملزم عمران کو لاہور کی انسدادِ دہشت گردی کی عدالت میں پیش کردیا گیا جبکہ عدالت نے ملزم عمران کو 14 روزہ ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کردی ہے

ملزم عمران کو سخت سیکیورٹی میں صوبائی دارالحکومت کی انسداد دہشت گردی کی خصوصی عدالت لایا گیا تھا اور اسے جج سجاد احمد کے سامنے پیش کیا گیا۔

یاد رہے کہ گزشتہ روز (23 جنوری) کو قانون نافذ کرنے والے اداروں کی جانب سے ملزم عمران کو پاکپتن سے گرفتار کیا گیا تھا۔

اپنے دلائل دیتے ہوئے سرکاری پروسیکیوٹر نے عدالت کو بتایا کہ ملزم بچوں کو کھانے پینے کی چیزیں دے کر بہکایا کرتا تھا۔

ذرائع کے مطابق ملزم عمران نے سنسنی خیز انکشاف میں بتایا کہ وہ بچیوں کو نیاز کے چاول، ٹافیاں اور خاص کر بچیوں کو بالوں کے کلپ دلوانے کے بہانے ساتھ لے جاتا تھا۔

عمران نے مزید بتایا کہ اس نے چلڈرن ہسپتال میں داخل کائنات کو دہی دلوانے کے بہانے اغوا کرکے ریپ کا نشانہ بنایا تھا۔

ملزم سے تفتیش کرنے والی جے آئی ٹی کے ذرائع نے کہا کہ ملزم عمران چند روز سے زینب کے گھر کے پاس کئی کئی گھنٹے بیٹھا رہا۔

انہوں نے بتایا کہ عمران کے 8 بچیوں کے ساتھ ڈی این اے میچ کرگئے ہیں جب کہ دو بچیوں کا ڈی این اے فارنزک شواہد ضائع ہونے کے باعث میچ نہیں کیا جاسکا جبکہ ملزم عمران نے خود 10 بچیوں سے ریپ کا اعتراف بھی کرلیا۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں