ہم سب نے اکھٹے ہو کر کشمیریوں کا مقدمہ پیش کرنا ہے ، معصو م کشمیر یوں کیلئے جو کر سکے کرینگے ، راجہ فاروق حیدر

Raza Farooq Hydir -aajkal

بولٹن: وزیر اعظم آزادکشمیر راجہ محمد فاروق حیدرخان نے کہا ہے کہ ہم سب نے اکھٹے ہو کر کشمیریوں کا مقدمہ پیش کرنا ہے ، معصو م کشمیر یوں کیلئے جو کر سکے کرینگے ،

میری خواہش ہے کہ دنیا بھر کے جمہوری ممالک میں ہم سب اکٹھے ہو کر کشمیریوں کی آواز بلند کریں اور وہاں کے لوگوں کو کشمیریوں پر ڈھائے جانے والے مظالم سے آگاہ کریں۔ 18 اپریل کو سب نے اکھٹے ہو کر ایک مثبت پیغام دیا ہے،مغرب کے لوگ مہذب ہیں ، جب یہ کشمیریوں کیلئے آواز اٹھائیں گے تو پوری دنیا میں ان کی آواز سنی جائے گی۔ یہاں کی نئی نسل کو بھی مسئلہ کشمیر سے آگاہ کرنے کی ضرورت ہے ، تارکین وطن کشمیری ہمارااثاثہ ہیں ، کشمیریوں کی جتنی بڑی تعداد بیرون ممالک مقیم ہے اگر وہ ہمت کریں تو کشمیر کا مسئلہ دوبارہ اقوام متحدہ کے ایجنڈے میں آسکتا ہے ۔ ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم آزادکشمیر نے بولٹن میں مسلم لیگ ن آزادکشمیر کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

loading...

انہوں نے کہاکہ آٹھ سال کی بچی آصفہ کے ساتھ جو سلوک کیا گیا، کیا انسانیت اس کی اجازت دیتی ہے ، اس کا ریپ کیا گیا ، اس کو نشہ آور ادویات کھلا کر اس کے بازو اور ٹانگیں توڑ دی گئیں اور بے دردی سے شہید کیا گیا۔وزیر اعظم نے کہا کشمیر کے معاملے پر کہ سب لوگوں کا اکھٹا ہو نا خوش آئند ہے ، 18اپریل کو سب جماعتوں کے قائدیں یہاں پر احتجاج کیلئے آئے ہیں،میرے ساتھ اپوزیشن لیڈر چوہدری محمد یاسین، تحریک انصاف کے صدر بیرسٹر سلطان محمود ، جماعت اسلامی کے عبدالرشید ترابی بھی کشمیریوں کا مقدمہ پیش کرنے کیلئے آئے ہیں ، کشمیرکے معاملے پر ہم سب ایک ہیں۔

مزید پڑھیں۔  پاکستانی قوم نے ملک کی قسمت کا فیصلہ عمران خان کے ہاتھ میں دیاہے،شیخ رشید احمد

وزیر اعظم نے کہاکہ یہاں کے لوگوں کی آواز پوری دنیا میں گونجتی ہے ، برطانوی وزیر اعظم نے جب امریکی صدر ٹرمپ کو برطانیہ دورے کی دعوت دی تھی یہاں کے مہذب لوگوں نے ٹرمپ کو اپنا دورہ منسوخ کرنے پر مجبور کردیا تھا۔ کشمیریوں کی آواز دنیا تک پہچانے کیلئے یہاں کے کشمیری نژاد ممبران پارلیمنٹ بھی اپنا بھرپور کردار ادا کررہے ہیں، لارڈ نذیر احمد ، افضل خان اور دیگر نے بھی یہاں احتجاج کو کامیاب بنانے میں اپنا بھرپور ادا کیا ہے ۔ وزیر اعظم نے کہاکہ تیسری بار یہاں آیا ہوں آپ سب کی مہمان نوازی کا شکرگزار ہوں ۔

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں