متحدہ عرب امارات، ایوی ایشن اتھارٹی میں آٹھ ماہ کے بچے کو نوکری پر رکھ لیا گیا

جنرل ایوی ایشن اتھارٹی
loading...

منفرد تعیناتی کا مقصد شہریوں میں خوشی اور مسرت کے جذبات بانٹنا اور خوش کو عام کرنا ہے،ڈائریکٹر

متحدہ عرب امارات کی جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کے ڈائریکٹر جنرل نے ایک انوکھی تعیناتی کی منظوری دی ہے جس کے تحت آٹھ ماہ کے ایک ننھے شیر خوار کو اتھارٹی میں ملازم مسرت تعینات کیا گیا ہے۔ یہ اپنی نوعیت کی دنیا کی پہلی تعیناتی ہے۔ عرب ٹی وی کے مطابق اس منفرد تعیناتی کا مقصد شہریوں میں خوشی اور مسرت کے جذبات بانٹنا اور خوش کو عام کرنا ہے۔

اس مقصد کے لیے آٹھ ماہ کے ننھے محمد الھاشمی کو ملازم مسرت تعینات کیا گیا ہے تاکہ لوگ اسے دیکھ کر خوش ہوں۔ محمد الھاشمی جنرل سول ایوی ایشن اتھارٹی کی ایک خاتون ملازم کا بچہ ہے۔ آج کے بعد الھاشمی کو روزانہ کی بنیاد پر ڈیوٹی پر لایا جائے گا تاکہ خوشی اور مسرت کے ماحول کو عام کیا جاسکے۔

خیال رہے کہ امارات کی جنرل ایوی ایشن اتھارٹی کے ہاں اپنے ملازمین میں خوشی کو عام کرنے اور بھی متعدد اقدامات زیرغور ہیں جن میں صحت، اسپورٹس اور سماجی نوعیت کے اقدامات ہیں۔ ان کا مقصد اتھارٹی کے اندر امید اور خوشی کے جذبات کو مہمیز دینا اور مسرت کی روح کو پروان چڑھانا ہے۔

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  آپ کا دن کیسا گزرے گا؟

اپنا تبصرہ بھیجیں