سائنسدانوں نے بچے پیدا کرنے کے لیے سال کا بہترین وقت بتا دیا

بچے پیدا

 عام طور پر دیکھا گیا ہے کہ سردیوں کے موسم میں شادی شدہ جوڑے اولاد کی نعمت سے مالامال ہوتے ہیں، اب سائنسدانوں نے اس کی اصل وجہ بتا دی ہے۔

 سائنسدانوں کا کہنا ہے کہ سردیوں کا موسم سال کا وہ بہترین وقت ہے جب مردوخواتین حصول اولادکی خواہش پوری کر سکتے ہیں۔ اس کی وجہ یہ ہے کہ سردیوں کے موسم میں مردوں کے سپرمز کا معیار باقی پورے سال کی نسبت سب سے زیادہ بہتر ہوتا ہے اور اسی موسم میں بیضوں کے سپرمز کے ساتھ اختلاط کرنے اور بچہ پیدا کرنے کی صلاحیت بھی باقی مہینوں کی نسبت زیادہ ہوتی ہے۔

چنانچہ یہ وہ وقت ہے جب اولاد کے حصول میں دشواری کا سامنا کرنے والے میاں بیوی کے اولاد پانے کا امکان بھی زیادہ ہوتا ہے۔

ڈنمارک کے سائنسدانوں کا کہنا تھا کہ ”جن خواتین کو حاملہ ہونے میں دشواری کا سامنا ہے انہیں سردیوں کے موسم میں متحرک تو رہنا چاہیے لیکن زیادہ سخت ورزش اور مشقت طلب کاموں سے گریز کرنا چاہیے کیونکہ اس سے ان کے حاملہ نہ ہونے کا خطرہ   230 فیصد بڑھ جاتا ہے۔

اس کے علاوہ انہیں اپنے وزن پر بھی توجہ دینی چاہیے کیونکہ جن خواتین کا باڈی میس انڈیکس 30 یا اس سے زائد ہو انہیں حاملہ ہونے میں 2 گنا زیادہ وقت درکار ہوتا ہے۔مرد اگر ہفتے میں 3 دن 30 منٹ کے لیے ورزش کریں توان کے سپرمز کا معیار بہتر ہوتا ہے۔

مزید پڑھیں: مردہ خاتون کے رحم سے دو سال بعد بچے کی پیدائش

تاہم زیادہ کڑی ورزش ان میں ٹیسٹاسٹرون کی کمی کا سبب بنتی ہے۔ چنانچہ سردیوں کے موسم میں جب وہ بچہ پیدا کرنے کی کوشش کر رہے ہوں، انہیں بھی زیادہ سخت ورزش سے گریز کرنا چاہیے۔“

loading...

Spread the love
  • 3
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں