پولیس نے نہیں ہم نے قاتل عمران کو پکڑا، زینب کے والد کے دعویٰ

زینب
loading...

قصور: 7 سالہ زینب کے ساتھ زیادتی کے بعد قتل کرنے والا ملزم گرفتار کر لیا گیا، تاہم گزشتہ روز زینب کے والد نے دعویٰ کیا ہے کہ  پولیس نے نہیں ہم نے قاتل پکڑا، پریس کانفرنس

جمعرات کو زینب کے والد نے اپنے وکیل کے ہمراہ پریس کانفرنس کے دوران دعویٰ کیا کہ تحقیقاتی اداروں نے نہیں بلکہ انہوں نے خود زینب کے قاتل کو پکڑا تھا۔ اور اپنے اسی دعوے کو سچ ثابت کرنے کیلئے انہوں نے مشتبہ ملزم کی وہ تصویر بھی دکھائی جس میں ملزم صوفے پر بیٹھا دکھائی دے رہا ہے۔

 زینب کے والد  کے مطابق ملزم عمران کی یہ تصویر ان کے بھائی کے گھر کی ہے جہاں لانے کے بعد اسے پولیس کے حوالے کیا گیا۔

صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے بتایا کہ 5 جنوری کو زینب کے غائب ہونے کے بعد سے ہم اصرار کر رہے تھے کہ عمران ہی مجرم ہے لیکن پولیس نے ہماری بات کو نظرانداز کر دیا تھا۔ انکا کہنا تھا کے سی سی ٹی وی فوٹیج بھی ہمارے رشتہ دادورں نے حاصل کی۔

زینب کے والد کا مزید کہنا تھا کہ انہوں نے دوبار عمران کو پکڑ کر پولیس کے حوالے کیا۔ لیکن پولیس نے اسے چھوڑ دیا۔ والد محمد امین کا کہنا تھا کہ ہم نے آئی جی پولیس اور جے آئی ٹی کے سربراہ کو بھی عمران کو گرفتار کرنے کا  کہا لیکن کسی نے اسے گرفتار نہ کیا، پھر ہم ہی نے اسے گرفتار کر کے پولیس کے حوالے کیا۔

ان کے وکیل آفتاب باجوہ نے بھی کہا کہ ملزم اہل خانہ نے خود پکڑا ہے لہذا وزیراعلیٰ کی جانب سے جے آئی ٹٰی ٹیم کے لیے ایک کروڑ روپے انعام کی مذمت کرتے ہیں۔

یاد رہے کہ اس سے پہلے بھی ایک پریس کانفرنس میں زینب کے والد نے حکومت سے، کیس کی شفاف تحقیات، کچھ مقامات کے نام زینب کے نام سے منسوب کرنے اور اس طرح کے دیگر 11 مطالبات کیے تھے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں