بلاتفریق احتساب پر یقین رکھتا ہوں،چیئرمین نیب

چیئرمین نیب

اسلام آباد:چیئرمین نیب جسٹس جاوید اقبال نے کہا ہے کہ بلاتفریق احتساب پر یقین رکھتا ہوں، بدعنوانی سے متعلق تمام عوامی شکایات قومی احتساب آرڈیننس کے تحت نمٹائی جائیں گی۔

جاری بیان کے مطابق چیئرمین نیب نے نیب ہیڈکوارٹرز میں کھلی کچہری لگا کر ملک کے مختلف علاقوں سے آنیوالے افراد کی شکایات تحمل مزاجی اور اطمینان سے سنیں اور انہیں قانون کے مطابق حل کرنے کی ہدایت کی۔ شکایت کنندگان نے اس موقع پر انفرادی طور پر ان کی شکایات سننے پر چیئرمین نیب کا شکریہ ادا کیا۔

واضح رہے کہ چیئرمین نیب خود انفرادی طور پر عوامی شکایات سنتے ہیں بلکہ انہوں نے تمام نیب کے ریجنل بیوروز کے ڈی جیز کو بھی یہ احکامات جاری کئے ہیں کہ وہ بدعنوانی سے متعلق عوامی شکایات اپنے اپنے علاقائی بیوروز میں ہر ماہ کی آخری جمعرات کو دو بجے سے چار بجے تک سنیں اور ان کے دائرہ اختیار میں آنے والی شکایات کا قانون کے مطابق ازالہ کریں۔

چیئرمین نیب کے احکامات کی روشنی میں تمام ریجنل ڈی جیز نہ صرف یہ شکایات سن رہے ہیں بلکہ قانون کے مطابق انہیں حل بھی کر رہے ہیں اور اس حوالے سے ضروری احکامات بھی جاری کر رہے ہیں۔ چیئرمین نیب نے ریجنل بیوروز کے تمام ڈی جیز کو ہدایت کی کہ وہ شکایت کنندگان کی عزت نفس یقینی بناتے ہوئے ان کی شکایات قانون کے مطابق فوری طور پر حل کریں، اس سلسلے میں کسی قسم کی کوئی کوتاہی برداشت نہیں کی جائے گی۔

چیئرمین نیب نے کہا کہ میں بلا تفریق احتساب پر یقین رکھتا ہوں،نیب ’احتساب سب کیلئے‘ کی پالیسی پر عمل درآمد کے لئے پرعزم ہے۔ انہوں نے کہا کہ بدعنوانی سے متعلق تمام عوامی شکایات قومی احتساب آرڈیننس کے تحت نمٹائی جائیں گی۔ نیب نے شکایات کنندگان سے کہا ہے کہ ان کی شکایات کے ساتھ تمام ضروری دستاویزات، مکمل پتہ اور ٹیلیفون نمبر کے ساتھ ساتھ قومی شناختی کارڈ کی کاپی منسلک ہونی چاہئے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں