حکومت پنجاب ڈنگ ٹپاؤ پالیسی کے ذریعے بیوروکریسی کو نواز رہی ہے،پنجاب ٹیچرز یونین

پنجاب ٹیچرز یونین
loading...

لاہور: پنجاب ٹیچرز یونین کے مرکزی صدر چوہدری محمد سرفراز، سید سجاد اکبر کاظمی، رانا لیاقت علی، جام صادق، رانا انوار،راناالطاف حسین، ساجد محمود چشتی، عبدالقیوم راہی ، سعید نامدار، اسلم گھمن، افضل کیانی، رحمت اللہ قریشی، شیخ اختر، عبد الطارق نیازی،رانا طارق، راؤ عابد، راؤ شمشاد، نجم النساء، صفدر کالرو، ،یونس حسن، منیر انجم ، امتیاز طاہر و دیگر نے کہا ہے کہ تعلیمی بورڈزکے چیئرمین کے اختیارات ڈویژنل کمشنرز کو سونپنا سراسر زیادتی ہے۔

اس طرز عمل سے اساتذہ میں شدید اضطراب او ربے چینی پائی جاتی ہے۔حکومت پنجاب ڈنگ ٹپاؤ پالیسی کے ذریعے بیوروکریسی کو نواز رہی ہے جو کہ امتحانی نظام کیلئے تباہ کن ہوگا۔

کمشنرز کی تعیناتی سے حکومت کی نااہلی ثابت ہوگئی ہے کہ مستقل بورڈز چیئرمین بھی حکومت تعینات کرنے سے قاصر ہے۔

اگر بیوروکریسی اتنی باصلاحیت ہے تو انہیں وائس چانسلر، تعلیمی اداروں کے پرنسپل ، ہسپتالوں کے ایم ایس، میڈیکل کالجوں کے پرنسپل بھی تعینات کریں۔ایک طرف تو حکومت تعلیم کی بہتری کیلئے بڑے بڑے دعوے کررہی ہے تو دوسری طرف تعلیمی بورڈز کو کمشنرز کے حوالے کیا جارہا ہے جوکہ کسی صورت قبول نہیں ۔

لہذا وزیراعلیٰ پنجاب سے مطالبہ ہے کہ بیوروکریسی کو نوازنے کی بجائے سینئر اساتذہ کو مستقل بنیادوں پر چیئرمین بورڈز تعینات کیا جائے۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں