مقبوضہ کشمیر: طالب علم کی گمشدگی کے خلاف کشمیر یوینورسٹی کے طباء سراپااحتجاج

مقبوضہ کشمیر

مقبوضہ کشمیرمیں10روز قبل پْراسرار طور لاپتہ ہونیوالے طالب علم کی بازیابی کے حق میں کشمیریونیورسٹی کے طلبہ نے احتجاجی مظاہرہ کیا ۔

کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق طلبہ کی ایک بڑی تعداد یونیورسٹی کے جیولوجی ڈیپارٹمنٹ کے باہر جمع ہوگئی اور اپنے ساتھی سمیر احمد ڈارکی بازیابی کے حق میں احتجاجی مظاہرہ کیا. سمیر احمد ایم ایس سی کا طالب علم تھا جو 17مارچ سے لاپتہ ہے۔
احتجاج کرنے والے طلبہ کا موقف تھا کہ سمیر احمد کوفوری طور بازیاب کیا جائے۔ اس موقعہ پر احتجاج میں شامل ایک طالب علم نے صحافیوں کو بتایاکہ سمیر کے گھروالوں نے پولیس اسٹیشن میں اسکی گمشدگی کی رپورٹ بھی درج کرائی ہے۔ تاہم  اس کے بارے میں ابھی تک کوئی معلومات نہیں ملی ہیں۔ لاپتہ طالب علم سمیر کے بڑے بھائی محمد الطاف کا کہنا تھا کہ ہم نے سمیر کو ہر جگہ تلاش کیا ہے تاہم اس کا کچھ پتہ نہیں چل سکا ہے ۔  یونیورسٹی کے چیف پراکٹر نصیرا قبال نے میڈیا کو بتایا کہ یونیورسٹی کی انتظامیہ کوبھی سمیر کی گمشدگی پر تشویش ہے ۔ کشمیریونیورسٹی کے ارتھ سائنسز کے طلباء نے بھی یونیورسٹی میں مظاہر ہ کیا۔

loading...

واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے کے دوران جنوبی ضلع پلوامہ سمیر احمد، توصیف احمد ڈار ، عادل احمد بٹ سمیت تین نوجوان لاپتہ ہیں

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں