کسی کو غریب عوام کے ٹیکسوں کے پیسے برباد کرنے کی اجازت نہیں دینگے‘ چیف جسٹس پاکستان

چیف جسٹس نے سکولوں کو آگ لگانے کا نوٹس لے لیا

لاہور: چیف جسٹس پاکستان نے سول ایوی ایشن اور پی آئی اے کے افسران کے تفریحی دورے کی ویڈیو پر لئے گئے ازخود نوٹس پر سماعت کے دوران ریمارکس دئیے ہیں کہ کسی کو غریب عوام کے ٹیکسوں کے پیسے برباد کرنے کی اجازت نہیں دیں گے۔

چیف جسٹس پاکستان جسٹس میاں ثاقب نثار کی سربراہی میں بینچ نے سپریم کورٹ لاہور رجسٹری میں سماعت کی ۔ اس موقع پر قائم مقام ڈی جی سول ایوی ایشن اوردیگر افسران نے ٹکٹ ودیگر اخراجات کی رسیدیں جمع کرادیں ۔ چیف جسٹس نے قائم مقام ڈی جی سول ایوی ایشن اور افسران پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ یہ عیاشی کیلئے مفتے کا ملک ہے ،کتنے ٹکٹ لیے گئے اور کیا اخراجات آئے؟۔ آپ کو ادارے کے لیے اصول وضع کرنے چاہیے تھے۔ چیف جسٹس نے قائمقام ڈی جی سے استفسار کیا کہ کیا کیا آپ کو دعوت دی گئی تھی،آپ نے دعوت پر جانے کیلئے خود ہی اپنی انسپکشن کی ڈیوٹی لگالی۔

 چیف جسٹس نے استفسار کیا نانگا پربت دیکھنے کیلئے تفریحی دورے پر کتنے افسران گئے۔ جس پر عدالت کو بتایا گیا کہ کل 42 افسران تفریحی دورے پر گئے اور 23 لاکھ روپے سے زائد اخراجات آئے۔ چیف جسٹس نے کہا کہ کسی کو غریب عوام کے ٹیکسوں کے پیسے برباد کرنے کی اجازت نہیں دینگے۔چیف جسٹس عدالت نے کیس پر مزید سماعت 31 جولائی تک ملتوی کردی۔

Spread the love

Comments

comments

مزید پڑھیں۔  مری، نجی ہوٹل کی چیکنگ کے دوران ہوٹل انتظامیہ کا پنجاب فوڈ اتھارٹی کے عملے پر تشدد،

اپنا تبصرہ بھیجیں