مسقط میں پاکستانی ہاکی ٹیم کے پاسپورٹس ضبط

ہاکی

ایشین ہاکی چیمپئنز ٹرافی میں شرکت کرنے والی قومی ٹیم کےکھلاڑیوں کے پاسپورٹس ہوٹل انتظامیہ نے واجبات کی عدم ادائیگی پر اپنے قبضے میں لے لیے ہیں۔

اومان کے شہر مسقط میں فور اسٹار ہوٹل میں 28 ہزار ڈالر کی تاحال ادائیگی نہ کرنے پر قومی ٹیم مشکلات کا شکار ہوگئی۔

ہوٹل انتظامیہ نے خبردار کیا ہے کہ اگر پیسے نہیں دیں گے تو پاسپورٹس بھی واپس نہیں کریں گے۔ قومی ٹیم کی ہوٹل میں 28 اکتوبر تک بکنگ ہے۔

ہوٹل انتظامیہ کی جانب سے بار بار یاد دہانی کے باوجود ابھی تک پی ایچ ایف کی جانب سے یہ معاملہ حل نہیں کیا گیا، جس سے کھلاڑی بھی پریشان ہیں اور وہاں پر پاکستان کی بدنامی الگ ہورہی ہے۔

ذرائع کے مطابق ٹیم انتظامیہ نے ہوٹل منتظمین کو یقین دہانی کرائی تھی کہ پی ایچ ایف کے آفیشلز مسقط پہنچ رہے ہیں وہ پیسے ساتھ لارہے ہیں اور آپ کو ادائیگی کردی جائے گی، لیکن پی ایچ ایف آفیشلز بھی خالی ہاتھ وہاں پہنچے ہیں، آج ہفتے تک اگر ہوٹل بلز کلیئر نہیں ہوئے تو پھر معاملہ پولیس تک جاسکتا ہے۔

دوسری طرف پاکستان ہاکی فیڈریشن کے حکام خود فائیو اسٹار ہوٹل میں مقیم ہیں، صدر پی ایچ ایف خالد کھوکھر اپنے اہل خانہ کے ساتھ میچز دیکھنے پہنچے ہیں۔

سیکرٹری شہباز سینئر کے ساتھ محمد عرفان، قمر ابراہیم اور انٹرنیشنل کھلاڑی محمد علی بھی ان میچز میں قومی ٹیم کی پرفارمنس کا جائزہ لینے کے لیے وہاں گئے ہوئے ہیں۔

Spread the love
  • 2
    Shares

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں