آسٹریلیا میں2500سال پرانے تابوت سے حنوط شدہ لاش برآمد

آسٹریلیا

سڈنی یونیورسٹی کی نیکولسن عجائب گھر کے پاس گزشتہ ڈیڑھ سو سال سے مصر لائے گئے تابوت موجود ہیں،رپورٹ

آسٹریلیا میں سائنس دانوں کو ایک حنوط شدہ لاش کی باقیات پچیس سو سال پرانے تابوت سے ملی ہیں۔ ماضی میں اس تابوت کوخالی تصور کیا جاتا تھا اور اس پر تحقیق نہیں کی گئی تھی۔

غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق سڈنی یونیورسٹی کی نیکولسن عجائب گھر کے پاس گزشتہ ڈیڈھ سو سال سے مصر لائے گئے تابوت موجود ہیں۔ ان میں سے تین تابوتوں میں حنوط شدہ مکمل لاشیں موجود تھیں۔آسٹریلیا

گزشتہ برس جب ریسرچرز نے چوتھا تابوت کھولا تو وہ توقع کر رہے تھے کہ انہیں کچھ ہڈیاں یا پٹیاں ملیں گی۔اس ٹیم کے ریسرچر جیمی فریسر کا کہناتھا کہ ریکارڈ کے مطابق یہ تابوت خالی بتاتا گیا تھا اور فقظ کچھ مواد پڑا ملا تھا لیکن اس تابوت میں ایک حنوط شدہ لاش کی لگ بھگ دس فیصد باقیات موجود ہیں۔

یہ تابوت فراعین کی چھبیسویں نسل کی ایک خاتون کا ہے۔ فریسر کے مطابق ابتدائی تحقیق سے پتا چلا ہے کہ یہ حنوط شدہ لاش تیس برس کے انسان کی تھی۔ ابھی یہ کہنا مشکل ہے کہ کہ یہ لاش کسی مرد کی تھی یا خاتون کی۔

Spread the love

Comments

comments

اپنا تبصرہ بھیجیں